The news is by your side.

Advertisement

عام انتخابات 2018: ایم کیو ایم کا نئے چہروں کو ٹکٹ دینے کا فیصلہ

کراچی: ایم کیو ایم پاکستان نے عام انتخابات 2018 میں 40 فیصد نئے چہروں کو ٹکٹ دینے کا اعلان کردیا، متحدہ کنونیئر کا کہنا ہے کہ انتخابات سےپہلےدھاندلی کی گئی مگر میدان نہیں چھوڑیں گے۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم پاکستان نے یکم جولائی سے سندھ میں انتخابی مہم شروع کرنےکا فیصلہ کیا ہے، متحدہ ’اپنا ووٹ اپنوں کے لیے‘ نعرے کے ساتھ انتخابی دنگل میں کودے گی۔

ایم کیو ایم ذرائع کے مطابق انتخابی مہم کا آغاز کراچی سے ہوگا جبکہ تنظیمی ڈھانچے کو 5 فروری والی پوزیشن پر بحال کیا جائے گا، جس کے تحت  ڈاکٹر فاروق ستار کے ساتھ پی آئی بی جانے والے اراکین کو رابطہ کمیٹی و دیگر شعبہ جات میں مختلف ذمہ داریاں دی جائیں گی۔

مزید پڑھیں: کراچی: این اے 245 سے فاروق ستارکے کاغذات نامزدگی مسترد

ذرائع کا کہنا ہے کہ امیدواروں کے چناؤ اورانتخابات کے حوالے سے مشاورت آخری مرحلے میں داخل ہوچکی جبکہ 26 جون تک متحدہ اپنے امیدواروں کا اعلان کرے گی۔

متحدہ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم انتخابات میں 40 فیصد نئے چہروں کو ٹکٹ دے گی اس کے علاوہ ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی، فاروق ستار، کنور نوید، عبدالوسیم، شیخ صلاح الدین، علی رضا عابدی، خواجہ اظہار، امین الحق اور اسلم آفریدی کو بھی ٹکٹ ملنے کا امکان ہے۔

اسے بھی پڑھیں: این اے 243، ایم کیو ایم کے رہنما خواجہ اظہار کے کاغذات نامزدگی مسترد

ایم کیو ایم نے حلقہ بندوں پر اعتراضات مسترد ہونے کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا بھی فیصلہ کیا، اس ضمن میں کنونیئر خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ الیکشن سے پہلے دھاندلی کی گئی مگر ہم کسی کے لیے میدان نہیں چھوڑیں گے اور اپنی روایتی نشتوں پر ضرور کامیاب ہوں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں