The news is by your side.

Advertisement

’’مودی بتائیں ٹرمپ سے کیا طے کر کے آئے؟‘‘

نئی دہلی: بھارت کی اپوزیشن جماعت کانگریس کے سابق صدر نے نریندر مودی سے جواب طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ قوم کو بتائیں ٹرمپ سے امریکا دورے کے وقت کیا بات چیت طے ہوئی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر راہول گاندھی کا کہنا تھا کہ اگر امریکی صدرکا کشمیر کے معاملے پر ثالثی کا بیان درست ہے تو مودی نے بھارت کے مفاد اور شملہ معاہدے سے انحراف کیا۔

انہوں نے کہا کہ مودی کی کمزور تردی سے کچھ نہیں ہوگا وہ قوم کو حقائق سے آگاہ کریں اور بتائیں کہ آخر دورۂ امریکا میں ٹرمپ سے بات چیت میں کیا طے کر کے آئے۔

مزید پڑھیں: مودی نے ٹرمپ کو مسئلہ کشمیر پر ثالثی کیلئےدرخواست نہیں کی، بھارتی وزارت خارجہ

یاد رہے کہ گزشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیراعظم عمران خان کی ملاقات ہوئی تھی جس میں ٹرمپ نے کشمیر کے معاملے پر ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیش کش کی تھی۔

بھارتی وزیراعظم نے ٹرمپ کی پیش کش کو مسترد کیا البتہ بھارت کی اپوزیشن جماعتوں کا یہ مانناہے کہ مودی نے ٹرمپ سے کشمیر کے حوالے سے معاملات طے کر لیے اسی باعث امریکی صدر نے کھل کر ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیش کش کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں