The news is by your side.

Advertisement

الیکشن میں روسی مداخلت کا معاملہ، صدر ٹرمپ پر کوئی جرم ثابت نہ ہوسکا

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے خلاف دو سال سے جاری رابٹ ملر کی خصوصی تحقیقات اختتام پذیر ہوگئیں، تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق صدر ٹرمپ سے کوئی جرم سرزرد نہیں ہوا۔

تفصیلات کے مطابق 2016 کے امریکی صدارتی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت کے بارے میں سپیشل کونسل رابرٹ ملر کی تیار کردہ خفیہ رپورٹ کا خلاصہ جاری کر دیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ صدر ٹرمپ سے کوئی جرم سر زرد نہیں ہوا۔

رپورٹ کے خلاصے میں کہا گیا ہے کہ صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم کے دوران روس کے ساتھ کسی ملی بھگت کوئی ثبوت ملا۔

دوسری جانب ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ دو سال سے ان کے خلاف مفروضوں پر مبنی الزامات لگائے گئے اور آج سب جھوٹ ثابت ہوئے۔

امریکی صدر کا کہنا تھا کہ خصوصی کونسل رابرٹ ملر نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ٹرمپ کے خلاف روس سے ملی بھگت کے کوئی واضح ثبوت سامنے نہیں آئے۔

اس رپورٹ کو صدر ٹرمپ اور ان کے حمایتی صدر ٹرمپ کی ایک بڑی کامیابی قرار دے رہے ہیں۔

ساؤنڈ بائٹ رپورٹ میں مزید کہا گیا تھا کہ صدر ٹرمپ نے انصاف کی راہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی، اس بڑی خبر کے بعد اب صدر ٹرمپ کی صدارت پر چھائے کالے بادل کافی حد تک ختم ہوچکے ہیں۔

امریکی انتخابات میں روسی مداخلت کا معاملہ، ٹرمپ مخالفین پر برس پڑے

خیال رہے کہ گذشتہ روز ٹرمپ نے مخالفین کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا، رابرٹ میولرکی رپو رٹ منظرعام آنے پر ان کہنا تھا کہ انتخابی مہم میں روسی مداخلت کے الزام میں انہیں پھنسانے غیرقانی ناکام ہوگئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں