The news is by your side.

Advertisement

وزیراعظم بننے کا شوق تھا، جو پورا ہوگیا، مولانافضل الرحمان

اسلام آباد : جمعیت علما اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم بننے کا شوق تھا، پورا ہوگیا، اپوزیشن جماعتوں میں رابطے آخری مراحل میں ہیں، حزب اختلاف ایک ہی پلٹ فارم سے اپوزیشن کا کردار ادا کرنے کیلئے متفق ہے۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علما اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تین دہائیوں سےملک میں احتساب کی باتیں سن رہےہیں، کیوں سیاستدانوں کی کردارکشی کی جارہی ہے۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا اپوزیشن جماعتوں میں رابطے آخری مراحل میں ہیں،حزب اختلاف ایک ہی پلٹ فارم سے اپوزیشن کا کردار ادا کرنے کیلئے متفق ہے۔

سربراہ جمعیت علما اسلام ف نے کہا گزشتہ حکومت میں ڈالر کی قیمت 106 روپے پر مستحکم رہی، موجودہ حکومت میں ڈالر 150 تک پہنچے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا غریب طبقے کو بے روزگار کیا جارہا ہے، ایک کروڑ نوکریوں کی بات کہیں مذاق تونہیں، بس وزیراعظم بننے کا شوق تھا وہ پورا ہوگیا، محدود ذہنیت عکاسی کرتا ہے وہ ابھی کنٹینرسے نہیں اترے۔

جمعیت علما اسلام ف کے سربراہ کا کہنا تھا ہم نےاس وقت بھی جمہوریت کا تحفظ کیا اب بھی کریں گے، این آراو کرانے کا کس نے کہا ہے کس نے درخواست کی ہے، این آراوحزب اختلاف نہیں کرتی بلکہ حکومت کرتی ہے۔

خیال رہے جے یو آئی ف کے سربراہ اپوزیشن جماعتوں کی اے پی سی کیلئے متحرک ہوگئے ہیں ، مولانافضل الرحمان نے نواز شریف سے ٹیلیفونک رابطہ کرکے مجوزہ اے پی سی پرمشاورت کی اور خود ذاتی حیثیت میں شرکت کی دعوت دی۔

نوازشریف نے پارٹی سے مشاورت کے بعد جلد رابطہ کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

مولانافضل الرحمان کا کہنا تھا آصف زرداری بھی اے پی سی میں خود شرکت کریں گے، اے پی سی اکتیس اکتوبرکو بلائے جانے کا امکان ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں