سندھ کے لوگ 21 گھنٹے بجلی سے محروم رہتے ہیں: وزیر اعلیٰ سندھ -
The news is by your side.

Advertisement

سندھ کے لوگ 21 گھنٹے بجلی سے محروم رہتے ہیں: وزیر اعلیٰ سندھ

کراچی: وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کراچی میں بچوں کے لیے ملک کے سب سے بڑے ایمرجنسی سینٹر کا افتتاح کر دیا۔ اس موقعے پر انہوں نے کے الیکٹرک کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ سندھ کے لوگ 21، 21 گھنٹے بجلی سے محروم رہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کراچی کے علاقے کورنگی کے سندھ گورنمنٹ اسپتال میں بچوں کے ایمرجنسی سینٹر کا افتتاح کیا۔

یہ ملک بھر میں بچوں کے لیے اپنی نوعیت کا سب سے بڑا مرکز ہے۔ نئے ایمرجنسی سینٹر سے سالانہ ڈیڑھ لاکھ بچوں کو علاج کی سہولت میسر آئے گی۔

افتتاح کے موقع پر وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ بچوں کے علاج کے لیے مزید 2 سینٹر قائم کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کوشش ہے کہ شہریوں کو ان کے گھروں کے قریب علاج کی سہولت فراہم ہو سکے۔

سندھ کے لوگ بجلی سے محروم

میڈیا سے گفتگو کے دوران وزیر اعلیٰ کے الیکٹرک پر برس پڑے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں لوگ 21، 21 گھنٹے تک بجلی سے محروم ہیں۔ کے الیکٹرک میں حکومت سندھ کا ایک بھی ڈائریکٹر نہیں۔

وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ رمضان سے پہلے کے الیکٹرک حکام سے ملاقات ہوئی تھی۔ بعد ازاں وفاقی وزرا سے گزشتہ 15 دن میں کئی بار بات ہوئی۔ ’میں نے ان کو خط بھی لکھے اور بجلی کی صورتحال پوری طرح بتائی‘۔

انہوں نے کہا کہ میری دعا ہے کہ وفاقی حکمرانوں نے جو وعدے کیے ہیں وہ پورے کریں۔ کے الیکٹرک کو اپناسسٹم بہتر کرنا چاہیئے۔ ماتلی کا فیڈر 21 گھنٹے بند رہنا ظلم ہے۔

واضح رہے کہ کے الیکٹرک کی انتظامی غفلت اور نا اہلی کے سبب ماہ رمضان کے آغاز کے ساتھ ہی بجلی کے طویل بریک ڈاؤن کا سلسلہ جاری ہے اور گزشتہ 3 دن سے رات اور سحری کے اوقات میں بجلی غائب ہونا معمول بن گیا ہے۔


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں