site
stats
اہم ترین

پارٹی قیادت جو ہدایت کرے گی اُس پر عمل کریں گے، مراد علی شاہ

کراچی : نو منتخب وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ  وزات اعلیٰ کی سیٹ پر میں مراد علی شاہ نہیں بلکہ پیپلزپارٹی کا کارکن بیٹھ رہا ہے، مستقبل میں پارٹی جو بھی ہدایت دے گی اُس پر عمل کروں گا۔

تفصیلات کے مطابق جمیل الدین زماں سے ملاقات کے بعد اُن کی رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ’’پارٹی کی اعلیٰ قیادت جس جماعت سے بھی ملاقات کی ہدایت کرے گی وہاں ضرورت جاؤں گا کیونکہ میں جیالا ہوں اور اعلیٰ قیادت کے احکامات کو ماننا میری ذمہ داری ہے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہا ’’خواہش ہے کہ صوبے کے معاملات میں اپوزیشن جماعتیں اپنا کردار ادا کریں اور میری رہنمائی فرمائیں، پیپلزپارٹی افہام و تفہیم سے معاملات کا حل چاہتی ہے، پارٹی کی پالیسی کو مد نظر رکھتے ہوئے تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لے کر چلنے کی کوشش کروں گا‘‘۔

پڑھیں : بلاول بھٹو نے مراد علی شاہ کو وزیر اعلیٰ سندھ بنانے کا اعلان کردیا

 نومنتخب وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ ’’صوبے میں بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے، اپوزیشن جماعتیں صوبے کی خوشحالی کے لیے اپنا کردار ادا کریں اور میری رہنمائی کریں، انہوں نے مزید کہا کہ ’’وزیر اعلیٰ کا انتخاب لڑنا اور اس کی مخالفت کرنا سب کا آئینی حق ہے‘‘

مراد علی شاہ نے کہا ’’رینجرز اختیارات کا معاملہ جلد حل ہوجائے گا، پارٹی کی اعلیٰ قیادت نے اختیارات کے حوالے سے احکامات دے دیے ہیں مگر کراچی آپریشن تب ہی کامیاب ہوگا جبتمام ادارے اپنی ذمہ داری کو محسوس کریں گے‘‘۔

مراد علی شاہ نے اعلان کیا کہ ’’جمعے کو اسمبلی اجلاس میں اپنے اگلے مشن کا اعلان کروں گا اور عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ سندھ کے تمام مسائل پر جلد قابو پالیا جائے گا‘‘۔

بعد ازاں مراد علی شاہ نے پی پی رہنماء فریال تالپور سے ملاقات کی اور سندھ کی سیاسی صورتحال حال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top