نیب کے خوف سے افسران نے کام چھوڑ دیا ہے: وزیر اعلیٰ سندھ -
The news is by your side.

Advertisement

نیب کے خوف سے افسران نے کام چھوڑ دیا ہے: وزیر اعلیٰ سندھ

کراچی: وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ بدقسمتی ہے کہ وزیر اعظم کو سپریم کورٹ نے معطل کردیا ہے۔ آئین میں وزیر اعظم، وزار اور وزرائے اعلیٰ کو تحفظ حاصل ہے۔ مراد علی شاہ کو سندھ میں نیب کی کارروائیوں میں سازش کی بو آنے لگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی نا اہلی کو بدقسمتی قرار دے دیا۔

اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ وزیر اعظم کو ملک کی اعلیٰ عدلیہ ہٹاتی ہے۔ آئین کے آرٹیکل 248 کے تحت وزیر اعظم، وزرا اور وزرائے اعلیٰ کو ان کے آفیشل کام کرنے میں تحفظ حاصل ہے۔ اصل ایکشن نیب کے خلاف ہونا چاہیئے تھا۔

مراد علی شاہ سندھ میں نیب کی کارروائیوں پر بھی برس پڑے۔

مزید پڑھیں: سندھ اسمبلی میں نیا احتساب بل کثرت رائے سے منظور

انہوں نے انکشاف کیا کہ نیب کی وجہ سے افسران نے کام چھوڑ دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 12 وزرا اس وقت نیب کے مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں جبکہ متعدد افسران پر بھی مقدمات بنائے گئے ہیں جس کی وجہ سے سرکاری امور متاثر ہو رہے ہیں۔

مراد علی شاہ کو سندھ میں نیب کی کارروائیوں میں سازش کی بو آنے لگی۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ سندھ کو مفلوج کرنے کی سازش ہے۔ قومی احتساب بیورو سندھ میں کسی اور کے ایجنڈے پر تھی۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے نیب کو ناکام ادارہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ نیب کرپشن روکنے میں ناکام ہوگئی۔ صوبے میں مجبوراً نئے قوانین بنانے پڑے۔


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں