The news is by your side.

Advertisement

پرویز مشرف عدالت آنا چاہتے ہیں، وزارت دفاع سیکیورٹی دے: وکیل

اسلام آباد: آئین شکنی کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل کا کہنا ہے کہ سابق صدر عدالت آنا چاہتے ہیں، وزارت دفاع انہیں سیکیورٹی دے۔

تفصیلات کے مطابق خصوصی عدالت میں سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کی سماعت ہوئی۔ مشرف کے وکیل کا کہنا ہے کہ پرویز مشرف عدالت آنا چاہتے ہیں۔ وزارت دفاع انہیں سیکیورٹی دے، عدالت آنے پر گرفتار نہ کیا جائے۔

وکیل کے مطابق پیشی کے بعد مشرف واپس دبئی چلے جائیں گے۔

عدالت کا کہنا تھا کہ دیکھنا ہوگا کہ عدالت ریلیف فراہم کر سکتی ہے یا نہیں۔ جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہا کہ عدالت کے سامنے 3 سوالات ہیں۔ کیا عدالت کو وارنٹ گرفتاری معطل کرنے کا اختیار ہے؟ کیا عدالت مفرور اشتہاری کو حاضری سے استثنیٰ دے سکتی ہے یا نہیں اور کیا عدالت جائیداد ضبطگی کا حکم واپس لے سکتی ہے؟مشرف کے وکیل اختر شاہ نے کہا کہ سابق صدر کی جائیداد ضبط ہو چکی۔ ان کے پاس پاکستان میں رہنے کی کوئی جگہ نہیں ہے۔

پراسیکیوٹر اکرم شیخ کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف کے وکیل اختر شاہ کا وکالت نامہ جعلی ہے۔ اختر شاہ کے مطابق وہ مارچ 2017 میں مشرف سے ملے۔ وکالت نامے پر تصدیق 2016 کی ہے۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہا کہ ایک مسئلہ یہ ہے کہ پرویز مشرف عدالت نہیں آتے۔ اشتہاری قرار دیا گیا شخص درخواست بھی دائر کر رہا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں