The news is by your side.

Advertisement

بھارت: غنڈوں کا مسلمان خاندان کے گھر پر حملہ، بہیمانہ تشدد

نئی دہلی: بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ کے آبائی ضلع میں غنڈوں نے نہایت دیدہ دلیری سے ایک مسلمان خاندان کے گھر پر حملہ کر کے اہل خانہ کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور جاتے ہوئے گھر کو آگ لگا دی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست مدھیہ پردیش کے ضلع اکونا میں غنڈہ گردی کا بدترین واقعہ پیش آیا ہے، یہ ضلع ریاست کے وزیر داخلہ کا آبائی ضلع ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق ضلعی ہیڈ کوارٹر سے تقریباً 15 کلو میٹر دور ایک گاؤں میں مسلح بدمعاشوں نے ایک مسلمان خاندان پر لاٹھی، ڈنڈوں اور لوہے کی راڈ سے حملہ کر دیا، بعد ازاں غنڈوں نے گھر کو آگ بھی لگا دی۔

پولیس کے مطابق مذکورہ خاندان کا سربراہ زرعی مزدور ہے اور وہ اپنی بیوی بسم اللہ نٹ اور سالی سجنا نٹ کے ساتھ رہتے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ گاؤں کے راجہ بھیا گوجر، رام پال گوجر، رام اوتار گوجر اور بلی گوجر نامی افراد نے ان کے گھر میں گھس کر حملہ کیا۔

مذکورہ افراد نے گھر میں گھس کر اہلخانہ کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور جاتے جاتے گھر کو آگ لگا گئے۔

پولیس کو درج کروائی گئی ایف آئی آر کے مطابق متاثرین کا حملہ آوروں کے ساتھ زمین کا تنازعہ چل رہا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان اس سے قبل بھی مسلمان خاندان کے ساتھ زبانی تو تکار کرتے رہے اور دھمکیاں دے چکے تھے، متاثرین نے پہلے بھی پولیس کو شکایت درج کروائی لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی۔

واقعے کے بعد اہل علاقہ نے پولیس کو اطلاع دی جس کے بعد پولیس موقع پر پہنچی اور زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا۔ پولیس نے فوری طور پر ملزمان کا گرفتار کرلیا ہے۔

دھیر پور کے تھانہ انچارج اشوتوش شرما کا کہنا ہے کہ معاملے کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے چھاپہ مار کارروائیاں کی گئیں جس کے بعد چاروں ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا۔

واقعے کے بعد گاؤں میں کشیدگی ہے اور کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لیے پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی ہے۔ دتیا کے پولیس سپرنٹنڈنٹ امن سنگھ راٹھور نے بتایا کہ گاؤں میں ملی جلی آبادی ہے، اس لیے ہر قسم کے احتیاطی اقدامات کیے گئے ہیں۔

اس سے قبل بھی اسی ضلع میں ایک دلت خاندان پر اسی نوعیت کا حملہ کیا گیا تھا جس میں بدمعاشوں نے ایک دلت خاندان کو تشدد کا نشانہ بنایا اور ان کے گھر کو آگ لگادی۔ مذکورہ واقعے کے ملزمان تاحال فرار ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں