The news is by your side.

گائے کا گوشت کھانے پر مسلمان کا قتل منصوبہ بندی تھی،بھارتی تحقیقاتی کمیشن

دہلی: بھارت میں گائے کاگوشت کھانے کی افواہ پر قتل کا واقعے کی باقاعدہ منصوبہ بندی کی گئی تھی ۔

دہلی سے متصل دادری میں گائے کاگوشت کھانے کی افواہ پر ایک مسلمان کو قتل کردیا گیا تھا، تحقیقاتی کمیشن کا کہنا ہے کہ قتل کا واقعہ ہجوم کا رد عمل نہیں تھا بلکہ اس کے لیے باقاعدہ منصوبہ بنایا گیا تھا ۔

رپورٹ کے مطابق اخلاق اور ان کی فیملی پر حملے کے لیے منصوبہ بندی سے ہندوؤں کے ایک مندر کو استعمال کیا گیا، دادری میں رات کے وقت ہندوؤں کے مشتعل ہجوم نے محمد اخلاق اور ان کے بیٹے پر حملہ کیا تھا، جس سے اخلاق احمد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے.

بھارت میں حالیہ دنوں میں گائے کا گوشت کھانے یا گائے کی اسمگلنگ کرنے کی محض افواہ پر تین مسلمانوں کو ہلاک کیا جا چکا ہے۔

واقعہ میں گوشت سے متعلق فورینزک رپورٹ آگئی ہے جس کے مطابق اخلاق کے گھر سے دستیاب گوشت گائے کا نہیں بلکہ بکرے تھا، چونکہ ان پر گائے کا گوشت کھانے اور جمع کرنے کا الزام تھا، اس لیے پولیس نے ان کے گھر کی فریج میں رکھے گئے گوشت کو جانچ کے لیے لیباٹری بھیجا تھا اور اس سرکاری رپورٹ کے مطابق وہ گوشت بکرے کا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں