site
stats
عالمی خبریں

بھجن میں غلطی کرنے پر مسلم گلوکار کو قتل کر دیا گیا

راجھستان: نام نہادسیکولر بھارت کا بھیانک انتہا پسند چہرہ سامنے آگیا ، بھارتی ریاست راجھستان میں مسلم گلوکار بھجن میں غلطی کرنے پر انتہا پسند ہندوؤں کی سفاکیت شکار ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق نام نہاد سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار ملک میں اقلیتوں کے ساتھ وحشیانہ برتاؤ کا ایک اور واقعہ سامنے آگیا ، مسلمان گلوکار انتہا پسندی کی بھینٹ چڑھ گیا۔

راجستھان میں مسلم لوک فنکار کوہندو انتہاپسندوں نے بیدردی سے قتل کردیا، بھارتی پولیس کے مطابق بھارتی ریاست راجھستان میں ڈانٹال نامی گاؤں میں ستائیس ستمبر کو تنازعہ اس وقت شروع ہوا، جب ایک پنڈت نے لوک گلوکار احمد خان پر الزام لگایا کہ اس نے ہندو دیوی کی شان میں پڑھی جانے والی بھجن میں غلطیاں کی تھیں۔

محض معمولی غلطی پر گلوکار کے قتل کے بعد مسلم آبادی خوفزدہ ہوکر ہجرت پر مجبور ہوگئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق اب تک دو سو سے زائد مسلمان علاقہ چھوڑ کر جا چکے ہیں، کئی خاندانوں نےاسکول اورسرکاری عمارتوں میں پناہ لے لی ہے، انتہاپسند مودی کی سرکار میں سیکولر بھارت انتہا پسندی کی راہ پر چل پڑا مسلمان،عیسائی،سکھ اور دلت کوئی محفوظ نہیں۔


مزید پڑھیں : گوشت کھانے کا شبہ،4 افراد پر ہجوم کا بدترین تشدد، ایک شخص ہلاک،3زخمی


بین الاقوامی مذہبی آزادی پر کےامریکی کمیشن کی رپورٹ کےمطابق دوہزار سولہ میں بھارت میں عدم برداشت اورمذہبی آزادی کے حقوق کی خلاف ورزی کے معاملات میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔

واضح رہے کہ نریندر مودی کی حکومت آنے کے بعد سے مسلمان اقلیت پر ہونے والے حملوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے، انتہا پسند ہندوؤں کے حملوں میں متعدد مسلمان ہلاک بھی ہو چکے ہیں جبکہ کئی ریاستوں میں گائے کے گوشت پر پابندی بھی عائد کی جا چکی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top