The news is by your side.

Advertisement

چھ اپریل سے احتجاجی مہم کا آغاز کریں گے، مصطفیٰ کمال

کراچی : چیئرمین پاک سرزمین پارٹی مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ 6 اپریل سے عوام کے حقوق کے لیے احتجاجی تحریک چلائیں گے اور عوام کو ان کے بھولے ہوئے حقوق کے حصول کے لیے متحرک کریں گے۔

پاک سرزمین پارٹی کی پہلے یوم تاسیس کے موقع پر وہ نشتر پارک میں کارکنان اور ذمہ داران کے جنرل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ پاکستان میں عوام اپنے حقوق کی جنگ لڑنا بھول گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی 6 اپریل سے احتجاجی تحریک کا آغاز کرے گی جس کے دوران عوامی مسائل کو اجاگر کیا جائے گا اور صاحبانِ اقتدار پر کراچی کے مسائل حل کرنے کے لیے سخت دباؤ ڈالیں گے۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ آج کوئی جلسہ عام نہیں بلکہ صرف کراچی کے سطح کے کارکنان اور ذمہ داران کا اجلاس ہے اس کے باوجود پورے نشتر پارک میں ہزاروں کارکنان موجود ہیں جب کہ اس جلسہ گاہ میں بڑی بڑی جماعتیں جلسہ عام کرتی ہیں جس کے لیے اندرون سندھ سے بھی عوام کو لایا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پہلے دن سے اپنے طے شدہ اہداف پر مثبت سیاست کر رہے ہیں اور محض ایک سال میں اتنی عوامی پذیرائی پر اللہ کے حضور شکر بجا لاتے ہیں ہماری کامیابی کی وجہ نیک نیتی کے سوا کچھ نہیں کیوں کہ انیس قائم کانی سمیت تمام رہنما کسی منصب، عہدے یا پیسے کی لالچ میں نہیں آئے۔

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ ہم نے ملک اور قوم کے خاطر اپنی عیاشیاں اور مراعات چھوڑ کر اپنی جانیں خطرے میں ڈال کر وقت کے فرعون کو للکارا ہے جس میں اللہ نے ہمیں کامیابی دی کیوں کہ ہمارا ایجنڈا کرپشن نہیں ہماری نیت میں فطور نہیں اور ہم ملک سے غداری کا سوچ بھی نہیں سکتے۔

سربراہ پی ایس پی نے کہا کہ آئندہ سال ہونے والے انتخابات میں ہم پورے سندھ میں بھرپور کامیابی حاصل کر کے سندھ میں اپنی حکومت بنائیں گے جب کہ 2023 کے انتخابات میں انشاءا للہ ہماری وفاق میں حکومت بنے گے۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ کراچی پاکستان کو 70 فیصد ریونیو کما کر دیتا ہے لیکن ملک دشمنوں نے یہاں کے لوگوں کو مذہب، قومیت اور لسانیت کی بنیاد پر آپس میں لڑوا کر اپنی سیاست چمکائی ہے چاہے کتنی ہی خون خرابہ کیوں نہ ہو لیکن اب پاکستان کو بچانے کے لیے پی ایس پی شہر میں سرگرم عمل ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں