The news is by your side.

Advertisement

اپ ڈیٹ : ہم موجودہ جمہوریت کو نہیں مانتے، مصطفیٰ کمال

کراچی : پاک سر زمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ پاکستان بہت نازک دور سے گزر رہا ہے، ہم ایسی جمہوریت کو نہیں مانتے کہ جو صرف اسلام آباد یا صوبوں کے ایوانوں میں ہوں.

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں مزارقائد کے قریب باغ جناح میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر پی ایس پی رہنماؤں وسیم آفتاب، انیس قائم خانی ، رضا ہارون کے علاوہ دیگر اہم رہنما بھی موجود تھے، اس کے علاوہ متعدد رہنماؤں کی بیگمات بھی جلسہ میں شریک تھیں۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ جمہوریت ایسی ہو جو ہر پاکستانی کے گھر کے باہر ہو، ترقیاتی منصوبوں میں ایم پی اے یا ایم این اے کا عمل دخل نہ ہو۔

انہوں نے کہا کہ ایم پی ایز یا ایم این ایز کا کام اسمبلیوں میں بیٹھ کر قانون سازی کرنا ہوتا ہے گلی محلوں کی سڑکیں بنانا نہیں ہوتا. جب تک عام آدمی کو اختیار نہیں ملے گا ہم ایسی جمہوریت کو رد کرتے ہیں۔

جو حکومت عوام کو پینے کا صاف پانی بھی مہیا نہیں کر سکتی اسے خود کو جمہوری حکومت کہنے کا کوئی حق نہیں۔ اگر عوام کو پینے کا صاف پانی نہ ملے، اگر عوام کے اختیار میں صحت، تعلیم اور سیوریج تک کا نظام نہ ہو تو ہمیں ایسی جمہوریت نہیں چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ آنے والی نسلیں اپنی تاریخ میں دیکھیں گی کہ ہمارے آباؤ اجداد نے کس طرح وقت کے فرعون کے سامنے آواز حق بلند کی، آج صرف تیس دن کی پارٹی نے اتنا کامیاب جلسہ منعقد کر کے تاریخ رقم کی ہے۔


Karachi is not a city of RAW agents, says… by arynews

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ آرمی اور رینجرز کے آپریشنز مسائل کا وقتی حل ہیں، مستقل حل کیلئے ہمیں اچھی حکمرانی لانی ہو گی، یونین کونسلز کو بااختیار بنانا ہو گا۔ اگر عوام کو اختیارات نہ دیئے گئے تو آپریشنز کے نتیجے میں کچھ دیر کیلئے قائم ہونے والا امن پھر ختم ہو جائے گا۔ گلی محلے کو اختیار دیئے بغیر، مقامی حکومتوں کو بااختیار بنائے بغیر جمہوریت کا کوئی فائدہ نہیں۔

ملک بھر سے لوگ جوق در جوق پاک سر زمین پارٹی میں شامل ہورہے ہیں، دنیا دیکھ رہی ہے  کہ یہ پاکستان کی تاریخ کا پہلا جلسہ ہے کہ جس میں سوائے پاکستان کے جھنڈے کے کوئی دوسرا جھنڈا نہیں۔ مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ہم آئندہ چند روز میں اپنی جماعت کا جامع منشور پیش کریں گے۔

ان کا کہناتھا کہ کراچی کی پہچان ایک پڑھے لکھے لوگوں کے شہر کے نام سے ہوتی تھی، لیکن کچھ دہائیوں سے اسے بدنام کر دیا گیا، یہاں کا نوجوان ٹارگٹ کلر اور بھتہ خور کے نام سے جانا جاتا ہے۔ ہمیں اس کو ختم کرنا ہوگا۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ہم اپنا پیغام لے کر ایک ایک گلی جائیں گے۔ اب یہ شہر را کے ایجنٹوں کا نہیں، محب وطن اورتہذیب یافتہ لوگوں کاہوگا۔

اس سے قبل جلسے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے پاک سر زمین کے رہنما وسیم آفتاب نے کہا کہ یہاں تمام پاکستانیوں کےہاتھوں میں قومی پرچم ہے،عوام نےفیصلہ کرلیا ہے کہ پاکستان دشمنوں کا ساتھ نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک بھر سے لوگ جلسے میں شریک ہیں، کراچی میں اب خوف کاراج نہیں رہےگا، انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت را کے ایجنٹوں کے خلاف کارروائی کرے، وسیم آفتاب کا کہنا تھا کہ اب پاکستان کے اچھے دن شروع ہوچکے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں