The news is by your side.

Advertisement

قائد ایم کیو ایم ہی متحدہ کے معاملات چلائیں گے، مصطفیٰ کمال

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے رہنماء سید مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ سندھ کے شہری ووٹرز کو لاوارث نہ سمجھیں اور ایم کیو ایم کے کارکنان کو لاوارث سمجھ کر کوئی غلط پالیسی مرتب نہ کی جائے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان ہاؤس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ، اُن کا کہنا تھا کہ ’’ایم کیو ایم کے ووٹرز کو لاوارث نہ سمجھا جائے، قائد ایم کیو ایم کی گزشتہ روز تقریر کے بعد سندھ کے شہری علاقوں خصوصاً کراچی اور حیدرآباد میں جو کریک ڈاؤن ہوا وہ صیح نہیں ہے‘‘۔

مصطفیٰ کمال نے کہاکہ گزشتہ روز اے آرے وائی سمیت تمام میڈیا ہاؤسز پر حملہ کرنے والوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے اور کسی بے گناہ کو اس میں گرفتار نہ کیا جائے‘‘۔ اُن کا کہنا تھاکہ ’’کچھ لوگوں کو بچانے کے لیے دوسروں کی آنکھوں میں دھول جھونکی جارہی ہے ، قائد ایم کیو ایم ہی متحدہ کے معاملات چلاتے رہے ہیں اور آئندہ بھی وہی چلائیں گے‘‘۔

مزید پڑھیں:  ہم ’متحدہ قومی موومنٹ‘ ہیں، فیصلے پاکستان میں ہوں گے: فاروق ستار

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ ’’شہری سندھ کے لوگوں نے ایم کیو ایم کو 85 فیصد مینڈیٹ دیا مگر  کراچی، حیدرآباد اور دیگر شہری سندھ کے علاقوں میں حالات بتدریج خراب ہوئے کیونکہ سندھ حکومت نے چور کو چوکیدار بنا دیا ہے۔

سربراہ پاک سرزمین نے ڈاکٹر فاروق ستار کی پریس کانفرنس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’سمجھ نہیں آتی کہ پریس کانفرنس میں کیا بات کی گئی، فاروق ستار بہت معصوم آدمی ہیں مگر معلوم نہیں کہ وہ کس چیز کا انتظار کررہے ہیں‘‘۔

رہنماء پاک سرزمین نے کہا کہ ’’متحدہ قومی موومنٹ گرتی ہوئی دیوار ہے جس اس کو بچانے آئےگا ملبے تلے دب کر زخمی ہوجائے گا، متحدہ قائد پاکستان کے خلاف باتیں کررہے ہیں اور اپنے ہی ملک کو دہشت گردی کا گڑھ کہہ رہے ہیں، یہ کیسی کیفیت ہے کہ انسان بھارتی خفیہ ایجنسی را کا ایجنٹ بن جائے‘‘۔

مصطفیٰ کمال نے متحدہ کے کارکنان سے کہا کہ ’’وہ خود کو تنہاء نہ سمجھیں، حکومت اگر عوام کو حقوق نہیں دے گی تو ہم اُس کے حقوق کے لیے سڑکوں پر نکلیں گے‘‘۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں