پی ایس پی کے سربراہ سید مصطفیٰ کمال سمیت دیگر رہنما رہا ، 48گھنٹوں میں آئندہ لائحہ عمل کا اعلان -
The news is by your side.

Advertisement

پی ایس پی کے سربراہ سید مصطفیٰ کمال سمیت دیگر رہنما رہا ، 48گھنٹوں میں آئندہ لائحہ عمل کا اعلان

کراچی : پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفی کمال کا کہنا ہے کہ ریلی کی تعداد سے حکمران خوفزدہ ہوگئے، پانی مانگنےوالوں پرآنسو گیس کے شیل برسائے گئے،مصطفی کمال جلد ہی آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق
پی ایس پی کے سربراہ سید مصطفیٰ کمال سمیت دیگر رہنماؤں کو رہا کردیا گیا ، پولیس حراست سے رہائی کے بعد میڈیا سے گفتگو میں سید مصطفی کمال نے کارکنوں کو خراج تحسین پیش کیا، پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ اپنے مطالبات سے کسی صورت دستبردار نہیں ہوں گے، آئندہ اڑتالیس گھنٹوں میں آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

مصطفٰی کمال کا کہنا تھا کہ جدوجہد کا دائرہ پورے صوبے تک پھیلے گا، پرامن کارکنوں پر تشدد کرکے حکمرانوں نے اپنے تابوت میں آخری کیل ٹھونک دی، اب احتجاج گلی گلی میں ہوگا۔

پی ایس پی سربراہ نے کہا کہ ریلی  کھڑی ہونے پر ہی حکمران لرز گئے، پانی مانگنےوالوں پرآنسوگیس کےشیل مارے جا رہے ہیں، خواتین کارکنان پر شیلنگ شرمناک  اقدام ہے، کراچی کے مظلوم عوام نے حکمرانوں کو ڈرا دیا ہے، صبر کا مظاہرہ کرنے پر کارکنان کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، لوگوں کی تعداد دیکھ کر حکمرانوں کی ٹانگیں کانپ گئیں، حکمرانوں کی ٹانگوں نےاب کانپنا ہے اور گر کر دفن ہونا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امن میرےکارکنوں کاسب سےبڑاہتھیارہے، لاکھوں کی تعدادمیں عوام نےنکل کرثابت کیاوہ جاگ چکےہیں، حکمرانوں کےدن سندھ میں گنےجاچکےہیں، کسی کارکن کو گولی، کسی کو ڈنڈے مارے گئے،کیا یہ اسرائیل ہے؟ رات میں لوڈشیڈنگ سے بلکتے بچوں کی فریاد لے کر آئے تھے۔


مزید پڑھیں : وزیر اعلیٰ‌ ہاؤس جانے کی کوشش، مصطفیٰ کمال اور مرکزی قیادت گرفتار


یاد رہے گذشتہ روز پی ایس پی اور حکومت کے درمیان تنازعہ ریلی کو روکنے پر شروع ہوا۔ عائشہ باوانی اسکول کے سامنے جلوس کو روکا گیا، مارچ کے شرکاء نے رکنے سے انکار کیا تو پولیس ایکشن میں آئی اور آنسوگیس کی شیلنگ کر دی، پھر پکڑ دھکڑشروع کر دی اور پی ایس پی رہنماؤں سمیت درجنوں کارکنوں کو حراست میں لے لیا گیا۔

مصطفیٰ کمال کوایس پی بلدیہ آصف رزاق گرفتارکرکے کلا کوٹ تھانے لے گئے، قائدین کی گرفتاری کے بعد پاک سرزمین پارٹی کاہنگامی اجلاس طلب کرلیا گیا، کلاکوٹ تھانے میں میڈیاسمیت کسی کو جانے کی اجازت نہیں دی گئی، تھانے کے باہر پی ایس پی کارکنان بڑی تعداد میں جمع ہوگئے، جو حکومت مخالف نعرے لگاتے رہے ۔ تھانے کے باہر پولیس اہلکاروں اور کارکنان میں تلخ کلامی اور لاٹھی چارج ہوا۔

سندھ کے صوبائی وزیر ناصر شاہ تھانے پہنچے اور یوں رات گئے مصطفیٰ کمال سمیت دیگر رہنماؤں اور کارکنوں کو رہا کردیا گیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں