site
stats
سندھ

اسٹیبلشمنٹ کا آدمی ہوتا تو متحدہ میں ہی رہتا، مصطفی کمال

کراچی:پاک سرزمین پارٹی کے رہنما مصطفی کمال کا کہنا ہے کہ ان پر اسٹیبلشمنٹ کے ساتھی ہونے کا الزام غلط ہے ، اگر وہ اسٹیبلشمنٹ کے آدمی ہوتے تو ایم کیو ایم میں رہتے ہوئے ان کے لیے زیادہ کارآمد ہوتے ۔

پی ای سی ایچ ایس میں پارٹی کے نئے سیکریٹریٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مصطفی کمال کا کہنا تھا کہ کچھ لوگ قائد ایم کیو ایم کی گرفتاری کا انتظار کررہے ہیں لیکن ہم فاروق ستار کی طرح اپنی باری کا انتظار کرنے نہیں بیٹھے، ہمیں اسٹیبلشمنٹ کے فرد ہونے کا طعنہ دینے والے بتائیں کہ وہ خود ان سے کتنی بار ملے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ دشمن نے کراچی کا مینڈیٹ رکھنے والوں کو خریدکر اپنے مقاصد پورے کیے ہیں کیوں کہ کراچی ملک کو ستر فیصد ریونیو کما کر دیتا ہے کراچی میں امن کی صورتحال خراب ہو تو پورا ملک متاثر ہوتا ہے ، انہوں نے الزام عائد کیا کہ دشمن کراچی کے عدم استحکام کے لیے ایک جماعت کو پیسہ فراہم کررہا ہے۔

متحدہ قومی موومنٹ کے قائد سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ ثبوت اور گواہوں کی موجودگی کے باوجود متحدہ قائد پر ہاتھ نہیں ڈالا جارہا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top