اماراتی جیل میں دماغی حالت خراب ہونے لگی تھی، برطانوی اسکالر Matthew Hedges
The news is by your side.

Advertisement

برطانوی اسکالر اماراتی جیل کے تلخ تجربات بیان کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے

لندن :  متحدہ عرب امارات میں جیل کاٹنے والے برطانوی اسکالرنے کہا ہے کہ جیل میں ان پر بے پناہ تشدد کیا جاتا تھا۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات میں جاسوسی کرنے کے الزام میں گرفتار ہونے والے برطانوی اسکالر میتھیو ہیجز نے بتایا کہ انہیں زبردستی پورا دن ایڑیوں پر کھڑا رکھا جاتا تھا۔

ڈاکٹر میتھیو ہیجز نے برطانوی خبرنشریاتی ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے تبایاکہ میں نے خود پر لگائے ہوئے جاسوسی کے الزامات کی تردید کی تھی صرف تشدد سے بچنے کے لیے ایم آئی 6 کے کیپٹن ہونے کا اعتراف کیا تھا۔

ان کاکہنا تھا کہ اماراتی مسلسل ایک بات کہتے تھے کہ برطانوی دفتر خارجہ میں ڈبل ایجنٹ کا کردار ادا کرو۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق 31 سالہ برطانوی اسکالر نے جاسوسی کے الزامات کی تردید کرتے ہوئے بتایا تھا کہ وہ پی ایچ ڈی کی تحقیق کے سلسلے میں متحدہ عرب امارات گئے تھے لیکن انہیں گرفتار کرلیا تھا۔

اماراتی مسلسل برطانوی دفتر خارجہ میں ڈبل ایجنٹ کا کردار ادا کرنے پر زور دیتے تھے۔

ڈاکٹر میتھیو ہیجز برطانوی اسکالر

اماراتی حکومت وثوق سے دعویٰ کیا کہ درھم یونیورسٹی کا طالب علم جاسوس ہے لیکن اسے 26 نومبر کو متحدہ عرب امارات کے قومی دن کے موقع پر عام معافی دے دی گئی۔

میتھیو ہیجز نے بی بی سی کو بتایا کہ تنہائی کے باعث میری دماغی حالت خراب ہورہی تھی اور مجھے خود کو مشغول رکھنے کےلیے کچھ کرنے کی بھی اجازت نہیں تھی جبکہ بیت خلاء بھی تنہا نہیں جانے دیتے تھے 4 مسلح اہلکار ساتھ جاتے تھے۔

ڈاکٹر میتھیو کا کہنا تھا کہ میرے ہاتھوں میں ہتھکڑی اورآنکھوں پر پٹی باندھی ہوئی تھی اور پورا دن ایڑھیوں پر کھڑا رکھتے تھے۔

ابوظہبی : عدالت نے برطانوی اسکالر جاسوسی کے الزام میں ٹرائل پر بھیج دیا

واضح رہے کہ برطانوی شہری پی ایچ ڈی اسکالر ڈاکٹر میتھیو ہیجز کو سنہ 2011 آنے والی عرب بہار ’انقلابی تحریکیں‘ ختم ہونے کے بعد امارات کی داخلہ اور خارجہ پالیسیوں کا مطالعہ کرنے دبئی آئے تھے۔

برطانوی اسکالر کو اماراتی پولیس نے رواں برس 5 مئی کو دبئی کے عالمی ہوائی اڈے سے جاسوسی کے الزام میں حراست میں لیا تھا۔

مزید پڑھیں : اماراتی عدالت نے برطانوی اسکالر کو عمر قید کی سزا سنا دی

یاد رہے کہ 22 نومبر کو31 سالہ ڈاکٹر میتھیوکو اماراتی عدالت نے ریاست کی جاسوسی اور اقتصادی سیکیورٹی تک رسائی حاصل کرنے کے الزام میں عمر قید کی سزا سنائی تھی، جبکہ سزا مکمل ہونے کے بعد ملک بدر کرنے کے احکامات بھی جاری کیے گئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں