The news is by your side.

Advertisement

’ووٹ کو عزت دو‘ کے نعرے کی پامالی: ن لیگ نے اپنے ہی وزیر مملکت کو نظر انداز کردیا

اسلام آباد: ’ووٹ کو عزت دو‘ کے نعرے کو پامال کرتے ہوئے ن لیگ نے اپنے ہی وزیر مملکت کو نظر انداز کردیا۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن نے اپنے دور حکومت کا آخری بجٹ پیش کرنے کے سلسلے میں منفی روایات کی داغ بیل ڈال دی ہے۔ نواز شریف کے ’ووٹ کو عزت دو‘ کے نعرے کھوکھلے نکلے۔

ووٹ کو عزت دینے کی بات کرنے والے سابق وزیر اعظم کی پارٹی نے بجٹ پیش کرنے کے لیے اپنے ہی وزیر مملکت رانا افضل کو نظر انداز کرکے ایک غیر منتخب نمائندے مفتاح اسماعیل کو ہنگامی طور پر وفاقی وزیر بنایا۔

قومی اسمبلی میں بجٹ ایک غیر منتخب نمائندے نے پیش کیا، دستاویز پر بھی مشیر خزانہ کا نام دیا گیا۔ اپنے آخری دنوں میں مسلم لیگ ن نے وزرا کی ایک نئی فوج تیار کرکے ثابت کیا کہ وہ ملک کے جمہوری سسٹم سے مخلص نہیں بلکہ ہر حال میں اپنے مفادات کا تعاقب کرنے والی پارٹی ہے۔

اپنی حکومت کے آخری دنوں میں ن لیگ نے طارق فضل چوہدری، مریم اورنگ زیب اور انوشہ رحمان کو مختلف وفاقی وزارتوں کے قلم دان سونپ دیے۔ قیادت کے خلاف آواز اٹھانے والی ماروی میمن بھی وفاقی وزیر بن گئیں۔

ن لیگ کے آخری بجٹ اجلاس میں شدید بدنظمی، مراد سعید اور عابد شیر علی میں‌ تلخ‌ کلامی

ن لیگ کی طرف سے اس سارے عمل پر ہر سطح پر تنقید کی گئی۔ سیاست دانوں نے مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل کو بجٹ سے چند گھنٹے قبل وفاقی وزیر برائے خزانہ مقرر کیے جانے کے معاملے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ سیاسی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ ن لیگ مفادات کے لیے اپنا بیانیہ فوراً بدل دینے میں کوئی عار محسوس نہیں کرتی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں