site
stats
اہم ترین

این اے 120 کا معرکہ کلثوم نواز نے سَر کرلیا، یاسمین راشد کو شکست

لاہور : غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق حلقہ این اے 120 میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں سابق وزیراعظم کی اہلیہ کلثوم نواز نے 59413 ووٹ لے کر کامیابی حاصل کرلی ہے جب کہ مدمقابل تحریک انصاف کی یاسمین راشد کو 46145 ووٹ ملے یوں کلثوم نواز 13268نے  ووٹوں کی برتری سے ضمنی الیکشن کے سب سے بڑے معرکے کو سَر کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 میں ہونے والے ضمنی انتخاب کے لیے ووٹنگ کا آغاز صبح 8 بجے ہوگیا جو بغیر کسی وقفے کے شام 5 بجے تک جاری رہا، سیاسی جماعتوں نے پولنگ کا وقت بڑھانے کا مطالبہ کیا جسے الیکشن کمیشن نے مسترد کردیا۔

الیکشن کمیشن کے ترجمان نے مؤقف اختیار کیا کہ جو شکایات موصول ہوئیں انہیں فوری طور پر حل کردیا گیا، ووٹنگ کے لیے مزید وقت نہیں بڑھایا جائے گا،جو لوگ 5 بجے تک پولنگ اسٹیشنز میں داخل ہوں گے انہیں ووٹ کاسٹ کرنے کی اجازت ہے۔

این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں مسلم لیگ ن کی جانب سے سابق وزیراعظم کی اہلیہ کلثوم نوازجبکہ پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے ڈاکٹریاسمین راشد اور پاکستان پیپلزپارٹی کی طرف سے فیصل میرامیدوار جبکہ حصہ لینے والے کل امیدواروں کی تعداد 44 ہے۔


تازہ ترین: غیر حتمی غیر سرکاری نتائج 

حاصل شدہ نتائج پولنگ اسٹیشنز کی تعداد : 220/220

تحریک انصاف (ڈاکٹر یاسمین راشد) :  46145

مسلم لیگ ن (کلثوم نواز) : 59413

 


 

پولنگ اسٹیشن سے موصول نتائج کی مفصل رپورٹ 

حلقہ این اے 120 کے55 فیصدغیرسرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز 37403 ووٹز کی برتری کے ساتھ پہلے جبکہ یاسمین راشد 29575 کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہیں۔

ایک سو اکیس پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ کی امیدوار 32701 جبکہ پی ٹی آئی کی امیدوار 25636 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر رہیں۔

حلقہ این اے 120 کے 79 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ کی کلثوم نواز 20581 ووٹوں سے آگے جبکہ ڈاکٹر یاسمین راشد 17210 ووٹوں سے دوسرے نمبر پر ہیں۔

چالیس پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کی یاسمین راشد 12695 ووٹ لے کر آگے جبکہ مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز 11378 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

حلقہ این اے 120 کے 34 حلقوں سے حاصل ہونے والے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کی یاسمین راشد 11382 ووٹ لے کر پہلے اور کلثوم نواز 10841 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

بتیس حلقوں کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کی امیدوار 10982 ووٹ لے کر پہلے جبکہ مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز 10636 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

حلقہ این اے 120 کے 27 حلقوں کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز 8353 ووٹ لے کر آگے اور تحریک انصاف کی امیدوار 4442 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

بائیس پولنگ اسٹیشز سے آنے والے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق بیگم کلثوم نواز 6676 لے کر پہلے اور ڈاکٹر یاسمین راشد 6676 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 12 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتیجے کے مطابق یاسمین راشد890 ووٹ لےکر آگے اور ن لیگ کی کلثوم نواز876 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر41 کاغیرحتمی غیرسرکاری نتیجہ سامنے آیا جس کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز454ووٹ لےکرآگے اور پی ٹی آئی کی یاسمین راشد218ووٹ لےکردوسرےنمبرپر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر41 کاغیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز454 ووٹ لےکرآگے جبکہ ی ٹی آئی کی یاسمین راشد218ووٹ لےکردوسرےنمبرپر،غیرحتمی نتیجہ

پولنگ اسٹیشن نمبر125کاغیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز298 ووٹ لےکرآگے جبکہ پیپلزپارٹی کےفیصل میر125 ووٹ لےکردوسرے اور پی ٹی آئی کی یاسمین راشد 8 ووٹ حاصل کر کے تیسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر104 کےغیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق پی ٹی آئی کی یاسمین راشد 569 ووٹ لےکرآگے جبکہ ن لیگ کی کلثوم نواز482ووٹ لےکردوسرےنمبرپر رہیں۔

16 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج

این اے 120 کے 16 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق تحریک انصاف کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد 5025 ووٹ لے کر آگے جبکہ مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز 4710 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر32کے غیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز 667 ووٹ لے کر آگے جبکہ تحریک انصاف کی یاسمین راشد 430 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر57 کےغیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق پی ٹی آئی کی یاسمین راشد342 ووٹ لےکرآگے جبکہ ن لیگ کی کلثوم نواز130ووٹ لےکردوسرےنمبرپر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 209 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتیجے کے مطابق مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز 128 ووٹ لے کر آگے اور تحریک انصاف کی امیدوار 121 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 137 کے غیر حتمی غیر سرکاری نتیجے کے مطابق مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز 830 ووٹ لے کر آگے اور تحریک انصاف کی ڈاکٹر یاسمین راشد 702 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 163 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ سامنے آیا جس کے مطابق تحریک انصاف کی ڈاکٹر یاسمین راشد 790 ووٹ لے کر آگے جبکہ ن لیگ کی کلثوم نواز 170 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 93 ملک پبلک اسکول کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز 101 ووٹ لے کر آگے اور تحریک انصاف کی ڈاکٹر یاسمین راشد 45 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 73 کے غیرحتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق پی ٹی آئی کی یاسمین راشد 347 ووٹ لےکرآگے جبکہ مسلم لیگ کی امیدوار 140 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 50 ماڈل گرلز اسکول کے غیر سرکاری غیر حتمی نتیجے کے مطابق مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز نے 230 ووٹ لے کر سبقت حاصل کی جبکہ تحریک انصف کی یاسمین راشت صرف 78 ووٹ لینے میں کامیاب رہی۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 44 کے غیر حتمی غیرسرکاری نتیجے کے مطابق تحریک انصاف کی یاسمین راشد 436 ووٹ لے کر آگے جبکہ مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز 198 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر23 اسلامیہ ہائی اسکول کے غیرسرکاری غیرحتمی نتیجے کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز98 ووٹ لےکرآگے اور تحریک انصاف کی یاسمین راشد 34 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر10الائیڈاسکول بڑاسانگھہ کےغیرسرکاری غیرحتمی نتائج کے مطابق ن لیگ کی کلثوم نواز 51 ووٹ لے کر آگے جبکہ پی ٹی آئی کی یاسمین راشد44 ووٹ لےکردوسرےنمبرپر ہیں۔

پولنگ اسٹیشن نمبر 9 الائیڈ اسکو بڑا سانگھہ کے غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق کلثوم نواز 280 ووٹ حاصل پہلے نمبر پر جبکہ تحریک انصاف کی امیدوار یاسمین راشد 132 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

اے آر وائی نیوز نے اپنی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے سب سے پہلے حلقہ این اے 120 کا غیر حتمی غیر سرکاری نتیجہ 6 بجے نشر کیا، الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی پابندی کے تحت انہیں 6 بجے کے بعد نشر کیا جائے گا۔

مسلم لیگ ن کی ریلی

پولنگ کاوقت ختم ہونےمیں ایک گھنٹہ باقی تھا کہ اسی دوران مسلم لیگ ن وقت ختم ہونے سے پہلے ہی مزنگ کے علاقے میں فتح کی ریلی نکال لی، امن و امان کی صورتحال قابو میں رکھنے کے لیے پولیس کی مزید نفری مزنگ اڈا پر طلب کرلی گئی۔

وزیرخارجہ خواجہ آصف

وزیر خارجہ خواجہ آصف نے لندن میں نوازشریف سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آج کی ملاقات سیاسی تھی جس میں سیاسی باتیں ہوئیں، حلقہ این اے 120 کے نتائج آنے کے بعد مزید بات کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ بیگم کلثوم نواز کی مزید سرجری ہوئی ہے تاہم امید ہے ضمنی الیکشن میں فتح ہماری ہوگی، شکایتیں موصول ہیں معاملہ الیکشن کمیشن میں اٹھائیں گے۔

وزیر اطلاعات و نشریات مریم اونگزیب

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اونگزیب نے کہا کہ حلقہ این اے 120 مسلم لیگ ن کا گڑھ ہے تاہم عوام جسے بہتر سمجھیں گے اُسے ووٹ دیں گے، ووٹ ڈالنا ہرشہری کا قومی فریضہ ہے، صبح کے مقابلے میں ٹرن آؤٹ کافی بڑھ گیا۔

انہوں نے کہا کہ ’میڈیا نے بہت مثبت کردار ادا کیا جو قابل تعریف ہے، صحافیوں کو پولنگ اسٹیشنز کے دورے کی اجازت دی گئی ہے۔

رکن پنجاب اسمبلی کا متنازعہ بیان

مسلم لیگ ن کی رکن پنجاب اسمبلی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر متنازعہ ٹوئٹ کیا جس میں انہوں کہا کہ چاہے کلثوم نواز کھڑی ہوں یا کوئی اور جانور ہم ووٹ اُسی کو دیں گے۔

حنا بٹ کی جانب سے ووٹرز کی توہین نے بعد سماجی رابطے پر صارفین نے شدید رکن پنجاب اسمبلی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جس کے بعد انہوں نے اپنا ٹوئٹ ڈیلیٹ کردیا۔


الیکشن کمیشن کا اعلان


الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں کے مطالبے کو مسترد کرتے ہوئے ووٹنگ کا وقت بڑھانے سے انکار کیا، پولنگ اپنے مقررہ وقت پر ہی ختم ہوگی۔ ترجمان الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ جو شکایات موصول ہوئی تھیں انہیں دور کردیا گیا ہے۔


پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان


پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ این اے 120 کا ضمنی انتخاب ہمارے ملک اور آنے والی نسلوں کے مستقبل کا فیصلہ کرے گا، ہرووٹر کو باہر آنا چاہیے۔


آئی ایس پی آر


پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ جن نمائندوں کے پاس الیکشن کمیشن کےکارڈ ہیں وہ پولنگ اسٹیشنز میں جارہے ہیں، پاک فوج کی جانب سےمیڈیا نمائندوں کے پولنگ اسٹیشنزجانے پرپابندی نہیں ہے۔


صوبائی وزیرقانون رانا ثنااللہ


اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرقانون پنجاب رانا ثنااللہ نے کہا کہ پولنگ اسٹیشن کے اندر کسی بھی غیرمتعلقہ شخص کی اجازت نہیں اور اگرکوئی غیرمتعلقہ شخص گیا ہے تواسےروکا جائے گا۔

صوبائی وزیرقانون نے کہا کہ واضح ہدایات ہیں کوئی شخص اسلحہ لےکرنہیں چلےگا،رانامشہود کےساتھ اسلحہ بردارلوگ تھے تو ان کے خلاف کارروائی ہوگی۔

حمزہ شہبازشریف سے متعلق رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ حمزہ شہبازپنجاب میں تمام انتخابی مہم کی سربراہی کرتےرہے ہیں لیکن ضابطہ اخلاق کی وجہ سے حمزہ شہبازانتخابی مہم سے پیچھے ہٹ گئے۔

Lahore

وزیرقانون پنجاب رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ پارٹی کی طرف سےمریم نوازنےانتخابی مہم کی سربراہی کی۔

انہوں نے اے آر وائی نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ این اے120 میں 30 سے40 سروےہوئےہیں لیکن سروے میں کسی نے نہیں کہا کہ مسلم لیگ ن این اے120 میں ہارے گی۔

رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ حلقےمیں کچھ ایسی چیزیں موجود ہیں جومعاملات کوبگاڑ رہی ہیں،انہوں نے کہا کہ حلقےمیں 40،50 امیدوارہوتے ہیں اس کامطلب کوئی انہیں کھڑاکررہا ہے۔

NA-120

وزیرقانون پنجاب رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں ٹرن آؤٹ دیکھاجائے گا اس کےبعد حلقےکےاصل نتائج سامنےآئیں گے۔


صوبائی وزیرتعلیم رانا مشہود


صوبائی وزیرتعلیم رانا مشہود احمد خان نے این اے 120 کے مختلف پولنگ اسٹیشنزپراسلحہ بردارلوگوں کےساتھ کیمپس کا دورہ کرکے اسلحہ کی نمائش کے حوالے سے الیکشن کمیشن کےقوانین کی دھجیاں اڑادیں۔

مسلم لیگ ن کے کارکنان کی سرعام اسلحہ کی نمائش اور دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے خاموش تماشائی بنے رہے۔

مسلم لیگ ن کے کارکن نے گاڑی تحریک انصاف کے موٹرسائیکل سوار کارکن پر چڑھا دی جس کے نتیجے میں موٹرسائیکل سوار کے پیچھے بیٹھےبچےکی ٹانگ ٹانگ ٹوٹ گئی۔

پاکستان تحریک انصاف کے کارکنوں نے کارسوار کو پکڑ لیا جبکہ مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے ڈرائیور کو زبردستی پکڑ کر بھاگنے کا موقع دیا۔


عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید


عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے اے آر وائی نیوز سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں پاکستان تحریک انصاف کی کامیابی دیکھ رہا ہوں۔

شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ میرے ضمنی الیکشن کے بعد یہ سب بڑا انتخابی معرکہ ہے۔


تحریک انصاف کی امیدواریاسمین راشد


پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار یاسمین راشد نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ آج عوام پاکستان کے لیے اٹھیں اورعمران خان اور بلے کو ڈالیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے پولیس سے التجا کی کہ وہ ووٹرز کو اندر آنے سے نہ روکیں، انہوں نے کہا کہ آپ اتنے ہی مسلم لیگ ن کے ہیں جتنے پی پاکستان تحریک انصاف کے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار یاسمین راشد نے کہا وووٹرزعمران خان کو ووٹ دے کر بچوں کا مستقبل محفوظ کریں جبکہ انہوں نے خواتین سے بھی درخواست کی کہ وہ گھروں سے باہر آکر بلے کو ووٹ لگائیں۔


تحریک انصاف کے رہنما چوہدری سرور


پاکستان تحریک انصاف کے رہنما چوہدری سرورنے این اے 120 کےانتظامات پراطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان انتظامات میں کسی کو دھاندلی کرنے کاموقع نہیں ملے گا۔

چوہدری سرور نے کہا کہ این اے 120 میں عوام فرسودہ نظام کےخلاف ووٹ دے کراحتجاج ریکارڈ کرائیں گے۔


پیپلزپارٹی کے امیدوار فیصل میر


پیپلزپارٹی کے امیدوار فیصل میرنے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ مختلف پولنگ اسٹیشنز سے ہمارے ایجنٹس کو باہر نکالا گیا،الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری کا مظاہرہ نہیں کررہا۔

فیصل میر نے الزام عائد کیا کہ الیکشن کمیشن کی موجودگی میں دھاندلی بھی ہورہی ہے،نوازشریف الیکشن کے پورےعمل کو خرید رکھا ہے۔


صوبائی وزیربلال یاسین


صوبائی وزیرخوراک بلال یاسین نے این اے 120 کےپولنگ اسٹیشن گورنمنٹ سینٹرل ماڈل ہائی اسکول میں ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ2013 کے مقابلےمیں آج زیادہ ووٹ کاسٹ ہوں گے۔

بلال یاسین نے کہا کہ لاہور پاکستان کا دل ہے اور لاہور کا دل این اے 120 ہے،انہوں نے کہا کہ آج بہت بڑا فیصلہ میاں نوازشریف کےحق میں آنے والا ہے۔


رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 3لاکھ 21 ہزار 786 ہے


قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 120 میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 3لاکھ 21 ہزار 786 ہے، اس حلقے میں مسلم ن لیگ، پاکستان تحریک انصاف، پاکستان پیپلزپارٹی،عوامی نیشنل پارٹی اور دیگر جماعتوں سمیت 44 امیدوار آمنے سامنے ہیں۔

این اے 120 میں اصل مقابلہ مسلم لیگ ن کی کلثوم نواز اورپاکستان تحریک انصاف کی یاسمین راشد کے درمیان متوقع ہے،اس حلقے میں مردوں کے لیے 103 اور خواتین کے لیے 98 پولنگ اسٹیشنز قائم کیے گیے ہیں۔


انگوٹھوں کے نشانات غائب ہونے کا انکشاف


دریں اثنا این اے120 میں 29 ہزار سے زائد ووٹرز کے انگوٹھوں کے نشانات غائب ہونے کا انکشاف ہوا ہے، الیکشن کمیشن نے ان 29 ہزار ووٹرز کی فہرست آویزاں کردی ہے جو کہ ضلعی الیکشن کمشنر کے دفتر میں لگائی گئی ہیں۔

by-election

الیکشن کمیشن نے اس ضمن میں کہا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر یہ فہرستیں آویزاں کی گئی ہیں، انگوٹھوں کے نشانات نہ ہونے والے بھی اپنا ووٹ کاسٹ کرسکتے ہیں، ان 29 ہزار افراد کے فنگر پرنٹس موجود نہیں لیکن تصاویر موجود ہیں۔


بغیر شناختی کارڈ کے ووٹ ڈالنے کی اجازت نہیں


انتخابات سے متعلق الیکشن کمیشن نے پریذائیڈنگ افسران کو ہدایت جاری کردیں جس کے مطابق بغیر قومی شناختی کے ووٹ ڈالنے کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی۔

NA-120 polling

عمر رسیدہ شخص اور حاملہ خواتین لائن کے بغیر ووٹ ڈال سکیں گے، نابینا اورعمر رسیدہ خواتین کو ترجیحی بنیادوں پرووٹ کاسٹ کرایا جائے گا۔


این اے 120 کی تاریخ‘ کون کب جیتا؟


الیکشن کمیشن نے ہدایات دی ہیں کہ امیدواروں کے کیمپ پولنگ اسٹیشن سے دور لگوائے جائیں، ووٹرز کو ووٹ کاسٹ کرتے ہوئے تصاویر نہ بنانے دی جائیں،پولنگ اسٹیشنز میں امیدوار کو ووٹ ڈالنے کے لیے قائل کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

این اے 120 سے مسلم لیگ ن کی امیدوار کلثوم نواز کی بیٹی مریم نواز کے این اے 120 میں سیاسی جماعتوں اور آزاد امیدواروں سے رابطے ہوئے جس میں اے این پی کے امیدوار نے مر یم نواز سے ملاقات کے بعد ن لیگ کے حق میں دست برداری کا اعلان کیا۔


کئی امیدوار کلثوم نواز کے حق میں دست بردار


اسی ضمن میں آزاد حیثیت سے کھڑے 3 امیداروں نے بھی مریم نواز سے ملاقات کی، آزاد امیدوار انعام خان اور امیر بہادر ہوتی نے بھی کلثوم نواز کے حق میں دست برداری کا اعلان کیا۔ دست بردار امیدواروں سے ملاقات کے دوران مریم نواز کے ساتھ وفاقی وزرا بھی موجود تھے۔

این اے 120 میں ضمنی انتخاب کی تیاریاں مکمل کرلی گئیں، این اے 120 کا انتخابی سازو سامان متعلقہ عملے میں تقسیم کردیا گیا، بیلٹ باکسز، تھیلے اور دیگر سامان آر اوز کی نگرانی میں عملے کے سپرد کردیا گیا۔

الیکشن کمیشن نے بتایا کہ فوج نے این اے 120 میں پولنگ اسٹیشنز کا کنڑول سنبھال لیا ہے، انتخابی سازو سامان کی تر سیل فوج کی نگرانی میں کی گئی، پولنگ کا عمل بروقت شروع کیا جائے گا،انتخابی عمل کے بروقت آغاز کے لیے ہدایت جاری کردی ہیں۔

بائیو میٹرک ووٹنگ کا تجربہ

سرکاری اطلاعات کے مطابق 220 پریزائیڈنگ افسران، 573 اسسٹنٹ پریذائیڈنگ افسر اور 573 پولنگ افسران اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔

NA-120

الیکشن کمیشن نے حلقہ این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں 39 پولنگ اسٹیشنوں پر آزمائشی طور پر 100 بائیو میٹرک ووٹنگ مشینز استعمال کرنے کا تجربہ کیا ہے۔


حلقے میں سیکیورٹی انتظامات مکمل


ایس پی سیکیورٹی نے بتایا کہ این اے 120 کے لیے سیکیورٹی انتظامات مکمل کرلیے ہیں، حلقے کو5زون اور11 سکیٹرز میں تقسیم کیا گیا ہے، 6 ایس پیز،17 ڈی ایس پیز،50 ایس ایچ اوز ڈیوٹی انجام دیں گے۔

NA-120

ایس پی سیکیورٹی کے مطابق حلقے میں7ہزار اہلکار ڈیوٹیاں سر انجام دیں گے،اضافی نفری کے لیے دوسرے اضلاع سے نفری طلب کی ہے، اہم عمارتوں پر پولیس کے اسنائپرز کو تعینات کردیا جائے گا،پیرو اور ڈولفن فورس اہم مقامات پر گشت بڑھائے گی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top