The news is by your side.

Advertisement

چیئرمین نیب کا بریگیڈیئر (ر )اسد منیر کی خود کشی کی وجوہات جاننے کے لئے انکوائری کا آغاز

آباد: چیئرمین نیب جاوید اقبال نے بریگیڈیئر (ر )اسد منیر کی خود کشی سےمتعلق انکوائری کاآغاز کردیا اور نیب راولپنڈی نے تمام ریکارڈ بھی فراہم کر دیا، انکوائری کا مقصد خودکشی کی وجوہات جاننا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بریگیڈیئر (ر )اسد منیر کی خود کشی سےمتعلق انکوائری کاآغاز کردیا، چیئرمین نیب جاوید اقبال نے خود انکوائری کا آغاز کیا، نیب راولپنڈی نے تمام ریکارڈ فراہم کر دیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے اسد منیر کے موبائل فون کا ڈیٹا بھی متعلقہ کمپنی سے طلب کرلیا گیا، ضرورت پڑنے پر اسد منیر کا موبائل فون بھی طلب کیاجاسکتاہے، انکوائری کا مقصد خودکشی کی وجوہات جاننا ہے۔

گذشتہ روز چیئرمین نیب نے اسد منیر کے خودکشی کے معاملے کی تحقیقات خود کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے نیب راولپنڈی سے تمام متعلقہ ریکارڈ بھی طلب کرلیا تھا۔

مزید پڑھیں : چیئرمین نیب کا اسد منیر کی خود کشی کی تحقیقات خود کرنے کا فیصلہ

واضح رہے کہ بریگیڈیئر (ر) اسد منیر نے 14 مارچ کی شب پنکھے سے لٹک کر خودکشی کر لی تھی تاہم اسد منیر کی خود کشی کرنے کی فوری اور واضح وجہ سامنے نہیں آئی، البتہ خاندانی ذرائع نے دعویٰ‌ کیا تھا کہ اسد منیر نیب کی تفتیش کی وجہ سے پریشان تھے۔

خاندانی ذرائع کے مطابق اسد منیر میڈیا پر چلنے والی خبروں پر کافی پریشان تھے، خودکشی سے ایک روز قبل نیب ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں اسد منیر کے خلاف ریفرنس دائر کرنےکی منظوری دی گئی تھی۔

بریگیڈیئر اسد منیر کا پوسٹ مارٹم نہ ہونے کی وجہ سے قانونی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی اور نہ ہی اہل خانہ نے کوئی مقدمہ درج کرایا۔

بعد ازاں بریگیڈیئر (ر) اسد منیر کا خط سپریم کورٹ کو موصول ہوا، جس میں نیب کے رویے پر تنقید کی گئی تھی، چیف جسٹس آف پاکستان نے نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نیب سے جواب طلب کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں