The news is by your side.

Advertisement

نندی پور پاور پروجیکٹ، بابر اعوان کی بریت کا تفصیلی فیصلہ جاری

اسلام آباد: احتساب عدالت نے نندی پورریفرنس میں تحریک انصاف کے رہنما بابر اعوان کی بریت کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا۔

احتساب عدالت کی جانب سے 12 صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کیا گیا جس میں لکھا گیا ہے کہ بابر اعوان کے پاس بطور وزیرقانون نندی پور پروجیکٹ کی صرف ایک ہی فائل بھی گئی جس کو انہوں نے ایک روز روکا اور پھر نوٹ لکھ کر اُسے واپس کردیا۔

عدالتی فیصلے میں لکھا گیا ہے کہ ایک دن فائل پاس رکھنے پر بابر اعوان کو منصوبےکاذمہ دار قرار نہیں دیاجاسکتا، اسی طرح راجہ پرویزاشرف بطور وزیرپانی وبجلی منصوبےکےانچارج تھے۔

فیصلے کے مطابق وزارت قانون اور پانی وبجلی میں اختلاف پر وزیر اعظم کوآگاہ نہ کیاگیا،شہادتوں کی بنیاد پربابراعوان اور ریاض کیانی کوبری کیاجاتاہے جبکہ راجہ پرویزاشرف،شمائلہ محمود،ریاض کی قسمت کافیصلہ بعدمیں ہوگا۔ عدالتی فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ نندی پور ریفرنس میں نامزد ملزمان عدالت کو بریت کی درخواستیں دے سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں: نندی پور ریفرنس میں بری بابر اعوان کو دوبارہ مشیر پارلیمانی امور بنائے جانے کاامکان

یاد رہے کہ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے نندی پور پاور پراجیکٹ میں تاخیرسےمتعلق ریفرنس میں بابراعوان کو 25 جون کو بری کردیاتھا جبکہ سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی بریت کے حوالے سے دائر درخواست مسترد کردیں تھیں۔

خیال رہے نیب کے مطابق پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں وزراء کی ملی بھگت سے نندی پور پاور پراجیکٹ منصوبے میں 2 سال کی تاخیرہونے سے قومی خزانے کو 27 ارب کا نقصان پہنچا تھا۔

نندی پور پاور پراجیکٹ کیس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، سابق وزیرقانون بابراعوان، سابق سیکریٹری قانون اور دیگر پر فرد جرم عائد ہوچکی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں