سیاسی رہنماؤں سمیت بڑے پیمانے پر تحقیقات کی منظوری -
The news is by your side.

Advertisement

سیاسی رہنماؤں سمیت بڑے پیمانے پر تحقیقات کی منظوری

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) کے اجلاس میں سیاسی رہنماؤں سمیت مختلف افراد کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جاوید اقبال کی زیر صدارت ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں بابر خان غوری اور دیگر کے خلاف ریفرنس دائرکرنے کی منظوری دے دی گئی۔ ملزمان پر غیر قانونی طور پر 974 بھرتیاں کرنے کا الزام ہے۔ ملزمان نے قومی خزانے کو تقریباً 2 ارب 85 کروڑ کا نقصان پہنچایا۔

نیب اجلاس میں سابق وفاقی وزیر خواجہ آصف اور دیگر کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزامات پر انکوائری کی منظوری بھی دی گئی۔ خواجہ آصف پر 3 ارب 66 کروڑ سے زائد قومی خزانہ کو نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

نیب ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں سکندر عزیز اور دیگر کے خلاف بھی ریفرنس کی منظوری دے دی گئی۔ ملزمان پر کنٹونمنٹ بورڈ پشاور بورڈ کی زمین پر جعلی کاغذات پر قبضے کا الزام ہے۔

علاوہ ازیں صوبائی ورکس ویلفیئر بورڈ پنجاب، سندھ و بلوچستان کے خلاف انکوائری کی منظوری دی گئی۔ افسران پر میٹرک ٹیک پروجیکٹ میں آلات کی خریداری میں خرد برد کا الزام ہے۔

نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے افسران و اہلکاروں کے خلاف بھی انکوائری کی منظوری دے دی گئی۔ ملزمان پر غیر قانونی طور پر ملتان سکھر موٹر وے کا ٹھیکہ دینے کا الزام ہے۔

اجلاس میں میسرز ساحل لمیٹڈ کی انتظامیہ اور ریوینیو افسران کے خلاف انکوائری کی منظوری دی گئی۔ ملزمان پر زمین غیر قانونی الاٹ کرنے اور کمرشل مقاصد کے لیے استعمال کرنے کا الزام ہے۔

علاوہ ازیں ظفر علی لغاری، خصوصی اسسٹنٹ برائے وزیر اعلیٰ سندھ بھلاج مل، سابق ممبر قومی اسمبلی عبد الحکیم بلوچ، ڈسٹرکٹ ناظم پشاور اور نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف بھی انکوائری کی منظوری دے دی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں