The news is by your side.

Advertisement

گاڑیوں کا فراڈ، عوام سے اربوں لوٹنے والے ملزم کی پلی بارگین

لاہور: احتساب عدالت نے عوام کو جمع پونجی سے محروم کرنے والے ملزم جاوید مظفر کی پلی بارگین کی درخواست منظور کر لی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق نیب کورٹ نے سادہ لوح عوام کے ساتھ 3 ارب روپے کے فراڈ کیس میں ملوث ملزم جاوید مظفر بٹ کی 1 ارب 20 کروڑ کی پلی بارگین کی درخواست منظور کر لی۔

اس کیس میں ایک اور ملزم ملک عثمان ریاض سے نیب لاہور نے 72 کروڑ کی پہلی پلی بارگین مارچ 2020 میں کی تھی، پلی بارگین کے بعد اپریل میں عثمان ریاض کی رہائی کا حکم دیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ عثمان ریاض اور جاوید مظفر نے گوجرانوالہ اور دیگر شہروں میں سادہ لوح شہریوں کو گاڑیاں دینے کا جھانسا دے کر اربوں روپے لوٹے تھے، سیکڑوں لوگوں نے گاڑیوں کی بکنگ کروائی، اور ڈیلرز پیسے لے کر بیرون ملک بھاگ گئے۔ ٹیوٹا موٹرز اسیکنڈل میں مرکزی ملزم عثمان ریاض کے خلاف دھوکا دہی کی شکایت پر نیب لاہور نے مئی 2019 میں تحقیقات کا آغاز کیا تھا۔ ستمبر 2019 میں تحقیقاتی ٹیم کی درخواست پر ملزم جاوید مظفر کو بھی گرفتار کیا گیا۔

نیب کا کہنا ہے کہ ملزمان کے خلاف مجموعی طور پر 647 مستند شکایات ملی تھیں، جو ریکارڈ کا حصہ ہیں، اکتوبر 2019 میں 14 کروڑ کی 8 نئی گاڑیاں، اور 42 گاڑیوں کے کاغذات متاثرین کو دیے گئے تھے۔

نیب لاہور کے ترجمان نے کہا کہ چیئرمین نیب کی ہدایت ہے کہ عوام کی لوٹی رقم کی برآمدگی ہماری ترجیح ہے، ڈیڑھ سال میں اس کیس میں نیب لاہور نے 1 ارب 92 کروڑ کی پلی بارگین کی ہے، پلی بارگین ایک مکمل سزا ہے، اس میں ملزم سے مکمل رقوم کی وصولی ہوتی ہے، اور وہ سزا یافتہ تصور کیا جاتا ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا نیب لاہور کا 2020 کے دوران ملزمان کو سزائیں دلوانے کا تناسب 78 فی صد رہا، یہ نیب لاہور کی شان دار کامیابی کا مظہر ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں