The news is by your side.

Advertisement

نیب ریفرنس: نااہل سابق وزیراعظم کو آج حاضری سے استثنیٰ مل گیا

اسلام آباد: سابق نااہل وزیر اعظم میاں نواز شریف کو احتساب عدالت نے آج کی حاضری سے استثنیٰ دے دیا‘ نواز شریف نے ہارس ٹریڈنگ کا شکار پارٹیوں سے مل کر لائحہ عمل بنانے کا عندیہ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق آج بروز بدھ نواز شریف العزیزیہ اسٹیل ملزاورفلیگ شپ ضمنی ریفرنسز کی سماعت کے لیے پیش ہوئے‘ جج محمد بشیرنے نوازشریف کی درخواست قبول کرتے ہوئے ان کو آج کی حاضری سے استثنیٰ دے دیا۔

عدالت نےنوازشریف کوآج حاضری لگاکرجانےکی اجازت دےدی۔ ان کوجانے کی اجازت وکیل خواجہ حارث کی استدعا کے بعد دی گئی جس میں انہوں نے درخواست کی تھی کہ نوازشریف کی طبیعت ناسازہے،جانےکی اجازت دی جائے۔

عدالت سے واپسی پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق نا اہل وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ ن ہمیشہ ہارس ٹریڈنگ کے خلاف رہی ہے۔جتنی پارٹیوں کے ساتھ زیادتی یا دھاندلی ہوئی ہے ان کےساتھ مل کرلائحہ عمل بنانے کوتیارہیں۔

دریں اثنا ٔ احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کیپٹن (ر)صفدر کا کہنا تھا چئیرمین سینیٹ مسلم لیگ ن کا ہوگا۔ فرحت اللہ بابر نے کل سینیٹ میں پاکستانیوں کی دل کی آواز پیش کی ۔

واضح رہے کہ کہ لندن فلیٹس سے متعلق ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف ان کے دونوں بیٹے حسن اور حسین نواز، مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کوملزم نامزد کیا گیا دیگر دو ریفرنسز العزیزیہ اسٹیل ملزجدہ اور آف شور کمپنیوں سے متعلق فلیگ شپ انوسٹمنٹ ریفرنسز میں نوازشریف سمیت ان کے دونوں صاحبزادوں کو ملزم نامزد کیا گیا تھا۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے نواز شریف کی نیب ریفرنس یکجا کرنے کی درخواست بھی خارج کردی تھی۔ضمنی ریفرنس کے مطابق تحقیقات سے پتا چلا ہے کہ نواز شریف نے العزیزیہ اسٹیل ملز قائم کی، ملز سے متعلق تمام دستاویزی شواہد موجود ہیں، جس وقت اسٹیل ملز قائم کی گئی اس وقت نواز شریف کی آمدنی میں واضح تضاد سامنے آیا۔

ریفرنس میں کہا گیا ہے حسین اور حسن نواز نے کاروبار سنبھالنے میں نواز شریف کی مالی معاونت کی، 2000-2001 میں ملزمان کے ظاہر کردہ اثاثوں کی مالیت 5 کروڑ 94 لاکھ 870 روپے تھی، ملزمان کی جانب سے ڈکلیئر اثاثوں میں 64 ہزار 984 ڈالرز بھی شامل ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں