The news is by your side.

Advertisement

مفتاح اسماعیل کو کن وجوہات پر گرفتار کیا گیا، نیب تفصیلات منظر عام پر آگئیں

اسلام آباد: سابق مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل کو کن وجوہات پر گرفتار کیا گیا تھا اس حوالے سے نیب کی تفصیلات منظر عام پر آگئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل سے متعلق نیب تفتیشی افسر ملک زبیر احمد نے رپورٹ احتساب عدالت میں پیش کردی، جس کے مطابق مفتاح اسماعیل کو ایل این جی ٹرمینل ون میں کرپشن پر گرفتار کیا گیا۔

دستاویز میں کہا گیا ہے کہ مفتاح اسماعیل کے مفرور ہونے کے بھی قوی امکانات تھے، ٹھیکہ مفتاح اسماعیل کی مداخلت پر پیپرا رولز نظر انداز کرکے دیا گیا۔

نیب دستاویز کے مطابق مفتاح اسماعیل اوپن ٹینڈرنگ نہ کرانے میں بھی ملوث پائے گئے ہیں، بطور سابق چیئرمین ایس ایس جی مفتاح اسماعیل نے اختیارات سے تجاوز کیا۔

مفتاح اسماعیل نے میسیرز کیو ای ڈی کنسلٹنٹ کو بڈنگ کا ٹھیکہ الاٹ کیا، اختیارات کے غلط استعمال سے قومی خزانے کو ایک ارب 56 کروڑ کا نقصان پہنچا۔

مزید پڑھیں: ایل این جی کیس، مفتاح اسماعیل 11روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

نیب دستاویز میں کہا گیا ہے کہ مفتاح اسماعیل نے سوئی سدرن گیس بورڈ کے فیصلوں کو بھی نظرانداز کیا گیا۔

دوسری جانب سابق ایم ڈی پی ایس او عمران من پسند کمپنی کو ٹھیکہ دلوانے میں شریک رہے ہیں، شیخ عمران الحق کو ایم ڈی پی ایس او تعینات کرکے نواز نے کی کوشش کی گئی۔

واضح رہے کہ احتساب عدالت نے ایل این جی کیس میں گرفتار سابق مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل کو گیارہ روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا اور 19 اگست کو دوبارہ عدالت کے سامنے پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں