The news is by your side.

Advertisement

نیب کا رویہ میرے ساتھ عزت والا ہے، آصف زرداری

اسلام آباد: پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ نیب کا رویہ میرے ساتھ بہت اچھا اور عزت والا ہے۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے آصف زرداری کا کہنا تھا کہ  مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی نے چوٹ کھا لی ہے اب حالات ٹھیک ہوجائیں گے، چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کا فیصلہ بلاول بھٹو کریں گے۔

اُن کا کہنا تھا کہ نیب کا رویہ میرے ساتھ عزت والاہے ، میں بھی نیب حکام کی دل سے عزت کرتاہوں، اگر حکومت یا کسی سے این آر او لینا ہوتا تو یہاں نہیں بیٹھا ہوتا، تفتیشی حکام اپنی استعداد کےمطابق مجھ سے سوال کرتے ہیں اور میں اُن سے تعاون کرتا ہوں۔

آصف زرداری کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے ساتھ تو بیٹھ گئے مگر عمران خان کے ساتھ مستقبل میں بیٹھنا بہت مشکل ہے کیونکہ وہ سیاسی قوت سے نہیں آئے، آج اور مشرف کی حکومت میں صرف ایک ہی فرق ہے۔

مزید پڑھیں: جعلی اکاؤنٹس کیس: آصف علی زرداری کے ریمانڈ‌میں 11 روز کی توسیع

سابق صدر نے سوال کیا کہ ’’کیا ریاستِ مدینہ میں سود ختم کیا گیا تھا یا شروع کیا گیا؟،  کیا اس بجٹ میں سود ختم کرنے سے متعلق کوئی اقدامات کیے گئے؟ ، اُن کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ کی گرفتاری کی باتیں افواہیں ہیں کوئی ان کان نہ دھرےجائیں۔

پی پی کے شریک چیئرمین کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو کی اپنی سوچ ہے وہ جیسا چاہے گا ویسا ہوگا، مسلم لیگ ن اور پی پی نے چوٹ کھائی اب حالات ٹھیک ہوجائیں گے، چارٹر آف اکانومی کی تجویز دی وہ نہیں آرہے، چارٹر آف معیشت کی تجویز کا مذاق اڑا رہے ہیں لیکن تاریخ میں بات آگئی، جو آسانی سے آتا ہے اسے جمہوریت کی قدر نہیں اس لیے آج کی حکومت کو عوامی مسائل کا اندازہ نہیں ہے۔

بعد ازاں آصف زرداری اور سابق اسپیکر ایاز صادق کی ملاقات ہوئی جس میں دونوں کے درمیان دلچسپ گفتگو ہوئی۔ ایاز صادق نے کہا کہ زرداری صاحب ! آپ سے ملنے آیا پھر لاہور جاؤں گا جس پر سابق صدر نے استفسار کیا کہ لاہور جا کر کیا کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: حساب کتاب اور پکڑ دھکڑ بند ہونی چاہیے، آصف زرداری

ایاز صادق نے جواب دیا کہ جناب میری ایک بیگم اور3بچے بلکہ اُن کے بھی تین تین بچے ہیں۔ اس بات پر وہاں موجود تمام سیاسی رہنماؤں نے قہقہ لگایا اور آصف زرداری نے سابق اسپیکر کا ہاتھ پکڑ کر بچوں کی تفصیل بھی پوچھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں