The news is by your side.

Advertisement

آغا سراج درانی کو عدالتی حکم پر گرفتار کیا گیا، واٹس ایپ پر حکم نہیں ملا، نیب

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو (نیب) نے آغا سراج درانی کی گرفتار ی سے متعلق ردعمل دیتے ہوئے ملزم کو عدالتی احکامات کی روشنی میں گرفتار کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق آغاسراج درانی کی گرفتاری سے متعلق میڈیا پر کچھ رپوٹس نشر ہوئی جس پر نیب نے ردعمل دیتے ہوئے واٹس ایپ میسج کےذریعے وارنٹ گرفتاری کے الزامات کی سختی تردید کردی۔

قومی احتساب بیورو کے ترجمان کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ نیب قومی ادارہ ہے جو آئین و قانون کے مطابق فرائض انجام دےرہاہے، سراج درانی کےگھرپر سرچ آپریشن عدالتی احکامات کی روشنی میں کیاگیا۔

مزید پڑھیں: آغا سراج درانی کیس: کاروباری شخصیت گلزار احمد کے وارنٹ گرفتاری جاری

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ آغاسراج درانی کےگھر پر سرچ آپریشن میں لیڈیز پولیس بھی موجود تھی، گھرسےجتنی دستاویزات برآمدکیں ان پرمتعلقہ افراد نےدستخط کئے، تلاشی کے دوران کسی بھی اہلکار نے اہل خانہ سے بدسلوکی نہیں کی اور نہ اس کا کوئی سوال پیدا ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ نیب نے چند روز قبل پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما اور سندھ اسمبلی کے اسپیکر آغا سراج درانی کو آمدن سے زائد اثاثوں کے الزام میں اسلام آباد سے گرفتار کر کے کراچی منتقل کیا تھا جس کے بعد انہیں اگلے روز احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔

احتساب عدالت نے اسپیکر اسمبلی کو یکم مارچ تک ریمانڈ پر  نیب کے حوالے کیا، دوسری جانب اسپیکر سندھ اسمبلی کی رہائش گاہ سے قومی احتساب بیورو نے چھاپے کے دوران اہم دستاویزات برآمد کیں جن کے خلاف ریفرنس دائر کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: زیر حراست اسپیکر کی سربراہی میں اجلاس، آغا سراج درانی کی نیب کے خلاف ہرزہ سرائی

پیپلزپارٹی نے اہم رہنما اور اسپیکر سندھ اسمبلی کی گرفتاری پر لسانی کارڈ کھیلنے کی کوشش کی اور اس کارروائی کو ماورائے آئین قرار دیا، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے چیئرمین نیب سے نوٹس لینے کی استدعا بھی کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں