The news is by your side.

Advertisement

نیب نے ڈائریکٹر آرکیالوجی ڈاکٹر صمد کے خلاف ریفرنس چیئرمین نیب کو بھجوادیا

پشاور: قومی احتساب بیورو (نیب) نے ڈائریکٹر آرکیالوجی ڈاکٹر صمد کے خلاف ریفرنس چیئرمین نیب کو بجھجوادیا۔

تفصیلات کے مطابق نیب نے ڈائریکٹر آرکیالوجی ڈاکٹر صمد کے خلاف ریفرنس چیئرمین نیب کو بھجوادیا ہے، نیب ذرائع کے مطابق سونے کی حروف سے لکھا قرآن غائب کرنے کا الزام ریفرنس میں شامل کیا گیا ہے۔

نیب حکام کے مطابق کوریا بھجوایا جانے والا مجسمہ بھی واپسی پر تبدیل کیا گیا، گورگھٹڑی کے منصوبہ میں ڈاکٹر صمد نے مختلف حیثیتوں سے تنخواہیں لیں۔

نیب کا کہنا ہے کہ کالاشہ پراجیکٹ میں ڈاکٹر صمد خود ہی ریسرچر اور ڈائریکٹر فنانس رہے، اطالوی ریسرچر چرماریالو کاکو 25 لاکھ روپے کا لائسنس 25 ہزار میں ڈاکٹر صمد نے دیا۔

نیب ریفرنس کے مطابق 85 افراد سے پہلے انٹرویو بعد میں بے روزگاری دفتر کے سرٹیفکیٹ لانے کا کہا گیا، عجائب گھر سے پرانے بندوق غائب ہونا بھی ریفرنس میں شامل ہے۔

مزید پڑھیں: ڈائریکٹرآرکیالوجی ڈاکٹرعبدالصمد کی ضمانت منظور

واضح رہے کہ آج پشاور ہائی کورٹ میں ڈاکٹر عبد الصمد کی جانب سے دائر کردہ درخواست ضمانت کی سماعت ہوئی ، جس میں فریقین کے دلائل سنتے ہوئے عدالت نے ڈاکٹر عبد الصمد کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔

یاد رہے کہ نیب کی جانب سے الزام عائد کیا گیا تھا کہ ڈاکٹرعبدالصمد نے اپنے اختیارات کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے آرکیالوجیکل سائٹس پر غیر قانونی بھرتیاں کی ہیں۔

گرفتاری کے وقت ڈائریکٹر آرکیا لوجی اینڈ میوزم ڈاکٹر عبد الصمد نے کہا تھا کہ ’’اگر الزامات ثابت ہوجائیں تو مجھے دگنی سزا دی جائے، لیکن اگر میں بے قصور ثابت ہوجاؤں تو پھر نیب کے افسر کے خلاف کارروائی کی جائے‘‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں