The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز نے نیب کا پروانہ ہوا میں اڑا دیا، 12اپریل کو دوبارہ طلب

لاہور : آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز نے نیب کا پروانہ ہوا میں اڑا دیا اور پیش نہ ہوئے، جس پر نیب نے 12اپریل کو دوبارہ طلب کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نیب نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں حمزہ شہباز کو گیارہ بجے طلب کیا تھالیکن وہ پیش نہ ہوئے، ان کی آمد کے پیش نظر پولیس کی بھاری نفری نیب کمپلیکس ٹھوکر نیاز بیگ کے باہر تعینات رہی تاکہ کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما نہ ہو۔

مسلم لیگ ن کے چند کارکن نیب آفس کے باہر جمع ہوئے اور اپنے قائد کے حق میں نعرے بازی کی۔

حمزہ شہباز کے سیکرٹری عطا تارڑحمزہ نے نیب میں جواب جمع کروایا کہ حمزہ شہباز ہائی کورٹ میں مصروفیت کے سلسلہ میں آج پیش نہیں ہوسکیں گے  لہذا پیشی کے لیے نئی تاریخ دی جائے، جس پر نیب نے انہیں بارہ اپریل کو طلب کرلیا۔

خیال رہے رمضان شوگرملزاورصاف پانی کیس میں گرفتاری کے خوف سے اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز لاہور ہائی کورٹ پہنچے ، جہاں عدالت نے سترہ اپریل تک عبوری ضمانت حاصل کرلی، عدالت کی حمزہ شہباز شریف کو ایک ایک کروڑ کےدو ضمانتی مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی۔

مزید پڑھیں : رمضان شوگرملزاورصاف پانی کیس ، حمزہ شہباز نے عبوری ضمانت حاصل کرلی

گذشتہ روز احتساب عدالت نے رمضان شوگر ملز کیس میں نامزد سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز پر فرد جرم عائد کی تھی تاہم دونوں نے صحت جرم سے انکار کردیا تھا۔

واضح رہے کہ آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس اور منی لانڈرنگ کیس میں نیب نے دو بار حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لئے ان کے گھر پر چھاپہ مارا تھا تاہم نیب انھیں گرفتار کرنے میں ناکام رہی تھی۔

نیب نے اعلامیے میں کہا تھا کہ نیب لاہور کی ٹیم حمزہ شہباز کی آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کے کیس میں ٹھوس شواہد کی بنیاد پر گرفتاری کے لیے گئی تھی تاہم حمزہ شہباز کے گارڈز کی جانب سے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا گیا جبکہ حمزہ شہباز کےمحافظوں نےنیب اہلکاروں کو دھمکیاں دی۔

بعد ازاں لاہور ہائی کوٹ نے حمزہ شہباز کی 10 دن کی حفاظتی ضمانت منظور کرلی تھی اور اور نیب سےتفصیلی جواب طلب کرلیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں