The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کے صاحب زادوں اور اسحٰق ڈار کو انٹر پول کے ذریعے واپس لانے کا فیصلہ

لاہور: سابق نا اہل وزیر اعظم نواز شریف کے صاحب زادوں حسن نواز، حسین نواز اور اسحٰق ڈار کو مختلف ریفرنسز میں مطلوب ہونے پر انٹر پول کے ذریعے واپس لایا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو (نیب) نے مختلف ریفرنسز میں مطلوب سابق وزیر اعظم کے خاندان کے افراد اور سابق وزیر خزانہ کو انٹر پول کے ذریعے لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ شہباز شریف کے داماد علی عمران کو بھی انٹر پول کے ذریعے واپس لایا جائے گا، جب کہ نواز شریف کے پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

نیب ذرائع کے مطابق سابق سیکریٹری پرائمری ہیلتھ پنجاب علی جان اور سابق سیکریٹری پنجاب نجم شاہ کا نام بھی ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالے جانے کی سفارش کی گئی ہے۔

نیب ذرائع نے بتایا کہ احتساب بیورو کی جانب سے وزارت داخلہ کو خط لکھا جائے گا کہ مختلف مقدمات میں شامل مذکوہ افراد کے نام ای سی ایل میں ڈالے جائیں۔

احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت


واضح رہے کہ 28 جولائی 2017 کو سپریم کورٹ نے اُس وقت کے وزیراعظم نواز شریف کو پاناما کیس میں نا اہل قرار دے کر نیب کو شریف خاندان کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا حکم دیا تھا۔

نیب میں جاری مختلف ریفرنسز میں نواز شریف، شہباز شریف اور مریم نواز کو اب تک متعدد پیشیاں بھگتانی پڑی ہیں تاہم حسن اور حسین نواز ابتدا ہی سے ایک بار بھی پیش نہیں ہوئے، جس پر نیب کی طرف سے انھیں اشتہاری بھی قرار دیا جاچکا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں