The news is by your side.

Advertisement

کلبھوشن یادیو کیس میں بھارت غلط بیانی سے کام لے رہا ہے، نفیس زکریا

اسلام آباد : ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا ہے کہ کلبھوشن یادیو کے کیس میں بھارت غلط بیانی سے کام لے رہا ہے جس کا عالمی عدالت انصاف نے بھی نوٹس لیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے ہفتہ وار بریفنگ میں گزشتہ روز کابل میں ہونے والے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہیں اور دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف افغان عوام کے ساتھ کھڑے ہیں اور ان کے غم میں‌ برابر کے شریک ہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ افغان خفیہ ایجنسی کا کابل دھماکے میں پاکستان کوذمہ دارٹھہرانا بے بنیاد ہے جسے پاکستان مسترد کرتا ہے، کابل دھماکے میں ہمارے سفارت خانے کے اہلکاربھی زخمی ہوئے اور پاکستان نے ہمیشہ افغانستان میں امن قائم کرنے کی مخلصانہ کوششیں کیں ہیں۔

نفیس زکریا نے مزید کہا کہ پر امن افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے پاکستان، افغان بدامنی سے شدید متاثر ہوا ہےافغانستان میں دیرپا امن کے خواہاں ہیں 40 سال سے افغانستان حالت جنگ میں ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ کلبھوشن کیس میں بھارت عالمی عدالت انصاف میں غلط بیانی سے کام لے رہا ہے اور حقائق کو توڑ مروڑ کے پیش کررہا ہے جس پر آئی سی جے نے بھارت کے جھوٹے بیانات کا نوٹس لیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان 2008 کا قونصلر رسائی معاہدہ تا حال مستند ہے لیکن بھارتی میڈیا اس ھوالے سے غلط بیانی کر رہا ہے اور عالمی عدالت انصاف کے خط کو توڑ مروڑ کر پیش کرہا ہے جب کہ حقیقت حال یہ ہے کہ بھارت کا 2008 کے معاہدے کا متروک ہونے کا پروپیگنڈا درست نہیں۔

نفیس زکریا نے کہا کہ حتمی فیصلے تک پھانسی روکنا قانونی اورمعمول کا حکم ہے اسے مقدمے میں ہار یا جیت سے تعبیر نہیں کیا جائے بلکہ کیس کو مکمل ہونے دیا جائے اس کے بعد کوئی بھین تبصرہ کرنا مناسب ہوگا ابھی یہ قبل از وقت ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان اپنے ہمسایہ ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے یہی وجہ ہے کہ جوائنٹ بارڈرمیکنزم پاکستان افغانستان کے درمیان موجود ہے جب کہ پاک ایران کےدرمیان سرحد پرآپسی تناؤ موجود نہیں تاہم پاک ایران سرحد پرواقعات میں جرائم پیشہ لوگ ملوث ہوتے ہیں اور بھارت کے ساتھ سرحد پرحالات ہمیشہ سے ہی گرم رہے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں