site
stats
کھیل

اسپاٹ فکسنگ: نجم سیٹھی کی ایف آئی اے سے تحقیقات روکنے کی درخواست

لاہور: اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی کی انکوائری پر سوالات اٹھنا شروع ہوگئے۔ چیئرمین پاکستان سپر لیگ نجم سیٹھی نے ایف آئی اے سے کارروائی روکنے کی درخواست کردی۔

اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں ملوث معطل کھلاڑیوں کے خلاف تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے۔

چیئرمین پاکستان سپر لیگ نجم سیٹھی نے ایف آئی اے کی تفتیش پراعتراض اٹھا دیا۔ ان کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے صرف ثبوت کی جانچ کے لیے ایف آئی اے سے مدد مانگی تھی، لیکن ایف آئی اے نے کیس ہی اپنے ہاتھ میں لے لیا۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں فکسنگ کے خلاف قانون نہیں، ایف آئی اے نے تحقیقات کیسے شروع کر دیں؟ انہوں نے سوال کیا کہ ایف آئی اے کو تحقیقات کا کرنے کا کہا ہی کس نے تھا۔

مزید پڑھیں: اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کرکٹرز کے نام ای سی ایل میں شامل

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے کی انکوائری پر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) بھی اعتراض کر سکتا ہے۔ ایف آئی اے اپنی کارروائی روک کر بورڈ کو اپنا کام کرنے دے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز ایف آئی اے نے معطل کرکٹرز محمد عرفان اور خالد لطیف کو طلب کیا تھا جہاں دونوں کھلاڑیوں نے اپنا وضاحتی بیان ریکارڈ کروا دیا۔

اپنے بیان میں انہوں نے بکی سے ملنے کا اعتراف تو کیا لیکن اسپاٹ فکسنگ کے الزامات ماننے سے پھر انکار کردیا۔

ایف آئی اے نے آج شرجیل خان اور شاہ زیب حسن کو بیان ریکارڈ کروانے کے لیے طلب کیا ہے۔

خیال رہے کہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں اب تک 5 کھلاڑیوں شرجیل خان، خالد لطیف، ناصر جمشید، شاہ زیب حسن خان اور محمد عرفان کو معطل کیا جاچکا ہے۔ ایک روز قبل وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کی ہدایت پر ان پانچوں کھلاڑیوں کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں بھی شامل کیا جا چکا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top