The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز، سلمان شہباز اور مفتاح اسماعیل کا نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا

اسلام آباد : وزارت داخلہ نے قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز ، سلمان شہباز ، سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل اور آفتاب میمن کا نام ای سی ایل  پر ڈال دیا، نیب نے ان افراد کا نام ای سی ایل میں ڈالنےکی سفارش کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز ، ان کے بھائی سلمان شہباز اور سابق وزیر خزانہ مفتاخ اسماعیل کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈال دئیے گئے ۔

پاکستان اسٹیل ملز کے سابق سربراہ معین آفتاب کا نام بھی ای سی ایل میں شامل کردیا گیا ہے، حکومت نے ان افراد کے نام قومی احتساب بیورو (نیب) کی سفارش پر ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دی۔

گذشتہ روز نیب کی جانب سے وزارت داخلہ کوخط لکھا گیا تھا، جس میں ان افراد کا نام ای سی ایل میں ڈالنےکی سفارش کی گئی تھی۔

مزید پڑھیں :  حمزہ، سلمان شہباز اور مفتاح اسماعیل کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سفارش

وزارت داخلہ کو بھیجے گئے خط میں بتایا گیا ہے کہ مفتاح اسماعیل کیخلاف ایل این جی کیس کی تحقیقات چل رہی ہے، حمزہ شہباز کیخلاف آمدن سے زائداثاثوں کی تحقیقات جاری ہے جبکہ سیکرٹری لینڈ سندھ آفتاب میمن جعلی بینک اکاؤنٹ کیس کے ملزمان میں شامل ہیں۔

اس سے قبل سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا نام ای سی ایل میں ڈالا گیا تھا ، نیب ذرائع کا کہنا تھا کہ کئی بار ایسا ہوچکا ہے کہ خاقان عباسی کو نیب کی جانب سے طلبی کے نوٹس دیئے گئے لیکن ہر بار انہوں نے بیرون ملک ہونے کا بہانہ بنا کر پیشی سے معذرت کرلی تو اب ان کو بیرون ملک جانے سے روکنے کیلئے ان کا نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا ہے، جس کے بعد اب وہ بیرون ملک نہیں جا سکیں گے۔

مزید پڑھیں :  ایل این جی کیس : سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا نام ای سی ایل میں شامل

یاد رہے کہ لاہور میں قومی احتساب بیورو (نیب) کی ٹیم نے حمزہ شہباز کی گرفتاری کیلئے ان کے گھر پر چھاپہ مارا تھا تاہم نیب ٹیم انہیں گرفتار کرنے میں ناکام رہی تھی۔

نیب نے اعلامیے میں کہا تھا کہ نیب لاہور کی ٹیم حمزہ شہباز کی آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کے کیس میں ٹھوس شواہد کی بنیاد پر گرفتاری کے لیے گئی تھی تاہم حمزہ شہباز کے گارڈز کی جانب سے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا گیا ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں