The news is by your side.

Advertisement

ناران : برفباری سے متاثرہ سیکڑوں سیاح دوسرے روز بھی محصور

ناران : پاکستان کے خوبصورت تفریحی مقام ناران میں موسم کی سختیاں جاری ہیں، دوسرے روز بھی برف باری کے باعث بچوں اور عورتوں سمیت سیکڑوں سیاح تا حال پھنسے ہوئے ہیں ۔ بے بس افراد نے یخ بستہ رات سڑکوں پر گزاری ۔

تفصیلات کے مطابق ناران میں شدید برف باری جاری ہے، کاروبار زندگی مفلوج ہوگیا،وہاں پھنسے ہوئے سیکڑوں سیاح اور دیگر عوام دوسرے روز بھی انتہائی مشکلات کا شکار ہیں۔

وزیراعظم کی ہدایت پر سڑکیں کھولنے کیلئے مشینری تو بھجوا دی گئی لیکن مشکلات کم نہ ہوئیں، ہزاروں سیاحوں نے شدید سرد موسم میں ساری رات سڑکوں پر ہی گزار دی، مگرڈی پی او نے راستےکھولنےکا دعویٰ کیاہے۔

مرکزی شاہراہ بھی بند ہے، قدرتی مناظر کی خوبصورتی کے دیدار کے لئے دور دراز مقامات سے آنے والے لوگ مصیبت کا شکار ہیں۔

ڈی پی او مانسہرہ نجیب الرحمان کا کہنا ہے کہ چالیس سال بعد اکتوبر میں ریکارڈ برفباری ہوئی ہے ۔ انھوں نے دعویٰ کیا ہے کہ بیشتر مقامات پر برف کو ہٹا دیا گیا ہے اورسیاحوں کی برف میں پھنسی ڈیڑھ سو گاڑیاں بھی نکال دی گئی ہیں۔

جبکہ دوسری جانب سیاحوں نے انتظامی دعوؤں کی نفی کی ہے۔ مقامی ہوٹل مالکان نے برفباری میں پھنسے لوگوں کیلئے ہوٹل میں مفت رہائش کااعلان کیاہے

ایک سیاح بابر یوسف زئی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شکوہ کیا ہے کہ حکومت ٹیکس تو لیتی ہے لیکن سیاحوں کے لئے تفریحی مقامات پرکوئی انتظامات نہیں کئے جاتے۔ دوسری جانب لوگوں نے شکوہ کیا کہ ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کا کوئی انتظام نہیں ہے۔

ادھر آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی ہدایت پر ریسکیو ٹیمیں ناران بھجوا دی گئی ہیں جن میں ڈاکٹرز بھی شامل ہیں۔
آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ بھٹہ کنڈی ناران روڈ سے 150سیاحوں کو نکال لیا گیا ہے ، نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے حکام نے بتایا کہ ایف ڈبلیو او کی مدد سے سڑکوں سے برف ہٹانے کا کام جاری ہے۔

ناران کا شمارپاکستان کے خوبصورت علاقوں میں ہوتا ہے۔ متعلقہ حکام کو سیاحوں کی مشکلات کے خاتمے کیلئے زبانی جمع خرچ کے بجائے عملی اقدامات کرنا ہوں گے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں