The news is by your side.

Advertisement

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا دورہ مقبوضہ کشمیر، وادی سراپا احتجاج بن گئی

مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال، بھارتی فورسز نے لال چوک سیل کردیا، غیراعلانیہ کرفیو

مظفر آباد: بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے دورۂ مقبوضہ کشمیر کے موقع پر وادی سراپا احتجاج بن گئی، بڑی تعداد میں کشمیریوں نے لائن آف کنٹرول کے دونوں طرف ریلیاں نکالیں۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں مودی کے دورے کے موقع پرمکمل ہڑتال رہی، حریت قیادت نے عوام سے سری نگر کے لال چوک تک احتجاجی مارچ کی اپیل کی۔

بھارتی فورسز نے لال چوک سیل کردیا، بہت بڑی تعداد میں فوجی اور پولیس اہل کار تعینات کردیے گئے، مختلف علاقوں میں غیراعلانیہ کرفیو لگادیا گیا۔ کشمیری میڈیا کے مطابق موبائل اور انٹرنیٹ سروس بھی بند کی گئی۔

آل پارٹیز حریت کانفرنس نے ڈپلومیٹک انکلیو کے مرکزی دروازے پر احتجاج کیا، مظاہرے کی قیادت کل جماعتی حریت کانفرنس آزاد کشمیر کے کنوینر نے کیا، مظاہرے میں حریت رہنماؤں سمیت سول سوسائٹی نے بڑی تعداد میں شرکت کی، سیاہ پرچم تھامے مظاہرین نے بھارت کے خلاف اور آزادی کے حق میں نعرے لگائے۔

آل پارٹیز حریت کانفرنس کے کنوینر غلام محمد صفی نے کہا کہ مودی کا دورہ دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے، ہم بھارتی حکومت کے کسی چکمے میں آنے والے نہیں۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی کارروائی‘ 3 کشمیری نوجوان شہید


انھوں نے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں نے مودی کے دورے کو مسترد کر دیا ہے، 70 سال میں ایک لاکھ سے زائد کشمیری قربانی دے چکے ہیں۔

دریں اثنا ایل او سی کے دونوں طرف احتجاجی ریلیوں میں سیاسی و مذہبی جماعتوں کےعمائدین اور طلبہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی، تاہم مودی کی سری نگر آمد سیکورٹی انتہائی سخت رہی، راستوں اور مختلف مقامات کو سیکورٹی فورسز نے گھیرے رکھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں