nasir سی پیک کی امریکی مخالفت سے مسئلہ کشمیر اجاگر ہوا، ناصرجنجوعہ
The news is by your side.

Advertisement

سی پیک کی امریکی مخالفت سے مسئلہ کشمیر اجاگر ہوا، ناصرجنجوعہ

اسلام آباد : قومی سلامتی کے مشیر ناصرجنجوعہ نے کہا ہے کہ سی پیک پورے خطے اوردنیا کیلئے معاشی خوشحالی کامنصوبہ ہے، اس کی مخالفت سے کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم کر لیا گیا۔

یہ بات انہوں نے سی پیک سے متعلق امریکی عہدیرارکے حالیہ بیان پر اپنے رد عمل میں کہی، انہوں نے کہا کہ امریکی وزیر دفاع جیمس میٹ کے بیان سے بھارت کی طرفداری اور سی پیک کی مخالفت سے مسئلہ کشمیر پھر اجاگر ہوگیا ہے، امریکا بھارتی فریق بننے کےبجائے مسئلہ کشمیر کےحل میں کردارادا کرے۔

ناصرجنجوعہ کا مزید کہنا تھا کہ تنازعہ کشمیرحل ہونے سے انسانی حقوق کی پامالی ختم ہوگی، خطہ ہمیشہ کیلئے پرامن اور پاک بھارت جنگ کا خدشہ بھی ختم ہوجائے گا۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے، مشیر وقومی سلامتی نے کہا کہ پاکستان چین بذریعہ سلک روٹ 1960سے زمینی رابطے میں ہیں، پاک چین زمینی رابطے پراب اعتراض کا جواز کیا ہے؟


مزید پڑھیں: پاکستان اور چین نے سی پیک پر امریکی اعتراض مسترد کردیا


واضح رہے کہ امریکا کی جانب سے ون بیلٹ ون روڈ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اسے معاشی اجارہ داری قائم کرنے اور دیگر ممالک کی خود مختاری کے خلاف قرار دیا گیا تھا۔

امریکی وزیر دفاع جیمس میٹ نے گزشتہ روز اقتصادی راہداری کو متنازع منصوبہ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ یہ منصوبہ گلگت بلتستان سے گزرے گا اور یہ خطہ متنازع خطہ ہے، جبکہ بھارت کے مطابق یہ خطہ مقبوضہ جموں اینڈ کشمیر کا حصہ ہے پاکستان کا نہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں