The news is by your side.

Advertisement

قومی احتساب بل میں بھی ترمیم کی تیاری کا انکشاف

اسلام آباد: حکومت کی جانب سے انتخابی اصلاحات بل میں ترمیم کے بعد اب قومی احتساب بل میں بھی ترمیم کی تیاری کا انکشاف ہوا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں انکشاف ہوا ہے کہ حکومت اب قومی احتساب بل میں بھی ترمیم کی خواہاں ہے اور اس ضمن میں اس نے تیاریوں کا آغاز کردیا ہے۔

پروگرام میں بتایا گیا ہے کہ قومی احتساب بل میں ترمیم کا فائدہ شریف خاندان اور اسحاق ڈار کو پہنچے گا کیوں کہ ترمیم سے نواز شریف اور اسحق ڈار کے احتساب عدالت میں دائر ریفرنسز پر اثر پڑے گا۔


یہ پڑھیں: نواز شریف کو پارٹی سربراہ بنانے کی راہ میں‌ حائل آخری رکاوٹ بھی دور


پاور پلے میں انکشاف کیا گیا قومی احتساب بل کی شق پانچ کو سرے سے نکال دیا جائے گا جس کا مسودہ تیار کرلیا گیا ہے، یہ شق نکالنے کے بعد نیب آرڈیننس سے کرپشن، دھوکا دہی، مجرمانہ خلاف ورزی کے مقدمے خارج ہوجائیں گے اور طے شدہ جرم کی تعریف بھی نیب آرڈیننس سے نکال دی جائے گی۔

اے آر وائی نیوز نے اس مسودے کی کاپی حاصل کرلی ہے جس کے تحت یہ مسودہ مخصوص قانون سازی کے لیے جلد پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا، مخصوص قانون سازی کے ذریعے شریف خاندان کو بچایا جائے گا،شریف خاندان کے بیرون ملک اثاثوں کو احتساب سے بچایا جائے گا۔

اطلاعات ہیں کہ متعلقہ تعریف فنانشنل انسٹیٹیوشن آرڈیننس 2001 میں شامل کی جائے گی، بل کی نئی شق کے مطابق بار ثبوت استغاثہ کو منتقل کردیا جائےگا جب کہ نیب آرڈیننس 2002 اس کے برعکس تھا۔

نئی شق سیکشن 18 شق ای کے مطابق استغاثہ کو پہلے شک وشبہ سے بالاتر ثابت  کرنا ہوگا،استغاثہ کو ثابت کرنا ہوگا کہ ملزم کے ذرائع آمدن متعلقہ وقت پر کیا تھے؟ملزم کے حاصل شدہ اثاثے اس کے ذرائع آمدن سے غیر متناسب تھے؟

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں