site
stats
پاکستان

قومی اسمبلی میں الیکٹرانک جرائم کے تدارک کا بل منظور

اسلام آباد: قومی اسمبلی نے الیکٹرانک جرائم کے تدارک کا بل منظور کر لیا بل وزیر مملکت انوشے رحمان نے پیش کیا۔

قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکر مر تضی جاوید عباسی کی صدارت میں ہوا اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے اکیس ترامیم پیش کی گئیں بیشتر ترامیم کے ساتھ حکومت نے اتفاق کیا بل کے تحت معلوماتی نظام یا ڈیٹا تک غیر مجاز رسائی کی صورت میں تین ماہ قید اور پچاس ہزار روپے جرمانہ کیا جائے گا ڈیٹا کو بغیر اجازت نقل یا ارسال کر نے پر چھ ماہ قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ تک سزا ہو گی معلوماتی اعداد و شمار میں مداخلت پر دو سال قید پانچ لاکھ رو پے جرمانہ ہو گا حساس انفر ااسٹر کچر معلوماتی نظام یا ڈیٹا تک غیر مجاز رسائی پر پانچ سال قید یا پچاس لاکھ جر مانہ ہو گا۔

بل کے تحت دہشت گردی اور کالعدم تنظیموں کی نفرت انگیز تقاریر پر معاونت کر نے پر پانچ سال قید یا ایک کروڑ جر مانہ ہو گا سائبر دہشت گردی پر چودہ سال قید یا پانچ کروڑ جرمانہ ہو گا الیکٹرانک جعل سازی پر تین سال قید پانچ لاکھ جرمانہ ہو گا سم کارڈ کے غیر مجاز اجراء پر تین سال قید یا پانچ لاکھ جر مانے کی سزا ہو گی مواصلاتی الات میں رد و بدل پر تین سال قید یا دس لاکھ جرمانے کی سزا ہو گی۔

بل کے تحت فطری شخص کی عز ت و وقار کے خلاف جرائم پر تین سال قید یا پانچ لاکھ رو پے جرمانہ ہو گا بل کے تحت وفاقی حکومت ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کی مشاورت سے خصوصی تربیت کا انتظام کرے گی وفاقی حکومت معلوماتی نظام پر حملے کے خلاف ایک یا اس سے زیادہ کمپیوٹر ایمبر جنسی ریسپانس ٹیمیں تشکیل دے گی۔

ایوان نے غیر ملکی زر مبادلہ انضباط بل اور غیر ملکی ترمیمی بل 2016 کی منظوری بھی دی ایوان کو پارلیمانی سیکرٹری صنعت و پیداوار نے بتایا کہ پاکستان اسٹیل مل تباہی کے دہانے پر ہے ملازمین کو دسمبر جنوی کی تنخواہ ادا کر دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وفاق نے صوبائی حکومت کو استیل مل خریدنے کے لیئے خط لکھ دیا ہے ان کا کہنا تھا کہ گریجویٹی فنڈز میں خرد برد کا کیس نیب میں ہے قومی اسمبلی کا اجلاس جمعرات کی صبع ساڑھے دس بجے دو بارہ ہو گا ۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top