نیشنل بینک بنگلہ دیش میں ہونے والے نقصان میں سے 9 ارب روپے کی واپسی کی امید -
The news is by your side.

Advertisement

نیشنل بینک بنگلہ دیش میں ہونے والے نقصان میں سے 9 ارب روپے کی واپسی کی امید

اسلام آباد: نیشنل بینک کے صدر سعید احمد کا کہنا ہے کہ بنگلہ دیش میں ہونے والے کل نقصان میں سے 9 ارب روپے کی ریکوری کی امید ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کے اجلاس میں نیب حکام نے نیشنل بینک بنگلہ دیش برانچ میں ساڑھے 18 ارب روپے کے فراڈ پر بریفننگ دی۔

کمیٹی کو بتایا گیا کہ بینک کے سابق صد ر علی رضا سمیت 7 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ فراڈ میں ملوث افراد کو سزا ملے گی۔ قرضے بنگلہ دیش میں دیے گئے اس لیے رقم کی مکمل ریکوری مشکل ہے۔

صدر نیشنل بینک سعید احمد کا کہنا تھا کہ معاملہ پرانا ہے اور اسٹیٹ بینک کو بھی معاملے سے آگاہ کیاتھا۔


کرپشن کیس سے متعلق سماعت

دوسری جانب نیشنل بینک کی بنگلہ دیش برانچ میں 18 ارب روپے کی کرپشن سے متعلق سماعت احتساب عدالت کراچی میں ہوئی۔

جنرل مینیجر بنگلہ دیش برانچ وسیم خان سمیت 7 سے زائد ملزمان کو پیش کیا گیا تاہم سابق صدر نیشنل بینک علی رضا پیش نہیں ہوئے۔

علی رضا کے وکیل کے مطابق وہ اسپتال میں زیر علاج ہیں اور اسپتال سے کسٹڈی نہیں لی گئی۔ سماعت پر تفتیشی افسر بھی پیش نہیں ہوا جس پر احتساب عدالت نے برہمی کا اظہار کیا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ مفرور بنگلہ دیشی شہریوں کی گرفتاری کے لیے سارک ممالک کو خط لکھ دیا گیا ہے۔

احتساب عدالت نے کیس کی مزید سماعت 11 اکتوبر تک ملتوی کردی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں