The news is by your side.

Advertisement

ترکی شام میں فوجی آپریشن کے دوران تحمل کا مظاہرہ کرے: نیٹو

استنبول: نیٹو کے سیکرٹری جنرل ژینس اشٹولٹن نے ترکی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ شام میں جاری فوجی آپریشن میں تحمل کا مظاہرہ کرے۔

تفصیلات کے مطابق نیٹو کے سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ فوجی اتحاد توقع کرتا ہے کہ شام کے شمالی حصے میں جاری اپنے فوجی آپریشن میں ترکی تحمل کا مظاہرہ کرے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترکی کے شہر استنبول میں نیٹو کے سیکرٹری جنرل ژینس اشٹولٹن برگ اور ترک وزیرخارجہ مولودی چاؤش کے درمیان ملاقات ہوئی، اس دوران شام کی حالیہ صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات کے دوران ژینس نے شام میں جاری فوجی آپریش کے ردعمل میں پیدا ہونے والی صورت حال پر تحفظات کا بھی اظہار کیا اور مطالبہ کیا کہ ترکی اس آپریشن کے دوران تحمل کا مظاہرہ کرے۔

دریں اثنا ترک وزیرخارجہ مولود چاؤش اولو نے بھی نیٹو سے توقع ظاہر کی کہ وہ ترکی کی سکیورٹی کو درپیش خطرات کے تناظر میں اس کا ساتھ دے گا۔

شام میں ترک فوج کی امریکی فوجی مورچے کے قریب گولہ باری

شام میں جاری فوجی آپریشن پر سعودی عرب، متحدہ عرب امارات سمیت یورپی ممالک کو بھی شدید تحفظات ہیں۔ جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ثالثی کی بھی پیش کش کرچکے ہیں۔

خیال رہے کہ ترک فوج کا شام میں 20 میل تک سیف زون بنانے کے لیے فوجی آپریشن جاری ہے، اس دوران غلطی کے نتیجے میں امریکی فوجی مورچے کے قریب گولہ باری ہوئی جہاں درجنوں اہلکار تعینات تھے۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ترک فوج نے شامی سرحدی شہر کوبانی میں توپ خانے سے گولاباری کی، فائر کیے گئے چند گولے امریکی دستوں کے قریب گرے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں