site
stats
پاکستان

نئے آرمی چیف کی تقرری، نوازشریف کے لیے ایک اور اعزاز

وزیرعظم نواز شریف کو تیسری بار وزیر اعظم کا اعزاز ہونے کے ساتھ یہ اعزاز بھی حاصل ہوگیا ہے کہ وہ ملک کے واحد وزیراعظم ہیں جن کی منظوری سے چھٹے آرمی چیف کی تعیناتی عمل میں آرہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نوازشریف نے سب سے پہلے جنرل آصف نواز جنجوعہ کو 1991 میں جنرل وحید کاکڑ کو 1993، جنرل پرویز مشرف کو 1998 اور جنرل راحیل شریف کو 2013 جبکہ جنرل عاصم قمر باجوہ کو 2016 میں بطور آرمی چیف نامزد کیا ہے۔ جنرل قمر جاوید باجودہ کی بحیثیت نئے آرمی چیف کی تقرری کے بعد میاں محمد نوازشریف کو سب سے زیادہ مرتبہ آرمی چیفس کی تقرری کا اعزاز  حاصل ہوگیا۔


پڑھیں: ’’ جنرل قمرباجوہ آرمی چیف اورجنرل زبیرحیات چیئرمین جوائنٹ چیفس مقرر ‘‘


نوازشریف کو تیسری بار وزیر اعظم بننے کے ساتھ ساتھ ایک اور بڑا اعزاز نئے آرمی چیف کی تقرری کا حاصل ہوا اگر 1999 میں نوازشریف کی جانب سے جنرل مشرف کو ضیاء الدین بٹ سے تبدیل کرنے کی ناکام کوشش کرلی جائے تو یہ چھٹا موقع ہوگا جب نوازشریف کے دستخط سے فوج کا نیا سپہ سالار مقرر کیا گیا۔

خیال رہے جنرل ضیاء الحق کے بعد آنے والے  8 بشمول نئے آرمی چیف کے وزیر اعظم نے 6 کا انتخاب کیا ہے۔ واضح رہے آرمی چیف آف اسٹاف جنرل راحیل شریف کی مدتِ ملازمت رواں ماہ کی 29 تاریخ کو ختم ہورہی ہے، اس ضمن میں وزارتِ دفاع کی جانب سے چار سینئر افسران کی فہرست وزیر اعظم کو ارسال کی گئی تھی۔

وزارتِ دفاع کی جانب سے بھیجی جانے والی سینیئر  افسران کی فہرست میں چیف آف جنرل اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل زبیر حیات کا شمار سب سےپہلے سینیئر افسران میں سے ہوتا ہے جبکہ دوسرے نمبر پر کورکمانڈر ملتان لیفٹیننٹ جنرل اشفاق ندیم احمد ہیں۔

سینیراٹی کے لحاظ سے کورکمانڈر بہاولپور لیفٹیننٹ جنرل جاوید اقبال رمدے کا تیسرا اور جنرل قمر جاوید باجودہ کا چوتھا نمبر ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top