The news is by your side.

Advertisement

چوہدری شوگرملز کیس میں نواز شریف گرفتار

لاہور: قومی احتساب بیورو ( نیب ) نے چوہدری شوگرملز کیس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کوگرفتارکر لیا، جس کے بعد  جسمانی ریمانڈ کے لیے آج ہی احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو ( نیب ) نے چوہدری شوگرملز کیس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کوگرفتارکر لیا تفتیشی افسر حامد جاوید نے سپرنٹنڈنٹ جیل کو وارنٹ گرفتاری دکھائے، چیئرمین نیب نے نوازشریف کےوارنٹ 4اکتوبر کو جاری کئے تھے۔

گرفتاری کے بعد نیب جسمانی ریمانڈ کے حصول کے لیے نواز شریف کو کوٹ لکھپت جیل سے لے کر احتساب عدالت جائے گی۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ چیئرمین نیب سے گرفتاری کی منظوری مانگ لی گئی، چوہدری شوگر ملز کیس میں نواز شریف سے تفتیش کرنا چاہتے ہیں ، نواز شریف جیل میں تفتیش کے دوران تعاون نہیں کرتے۔

نوازشریف کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر جوڈیشل کمپلیکس کے راستوں کو کنٹینرز اور خاردار تاریں لگا کر بند کردیا گیا ، اعظم نذیر تارڑ چوہدری شوگر ملز کیس میں نواز شریف کے وکیل ہے۔

چوہدری شوگرملز کیس کی سماعت احتساب عدالت کےجج امیرمحمدخان کریں گے , نیب کی جانب سےاسپیشل پراسکیوٹرحافظ اسداللہ عدالت میں پیش ہوں گے۔

نیب کا کہنا ہے کہ عدالت نے تفتیشی افسرکوقانون کےمطابق کارروائی کرنےکا حکم دیاہے اور سپرنٹنڈنٹ جیل گرفتاری پرقانون کےمطابق عملدرآمد کرے۔

گذشتہ روز نیب کی جانب سے پراسیکوٹر حافظ اسد اعوان نے درخواست دائر کی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ نواز شریف اس وقت کوٹ لکھپت جیل میں قید ہیں۔ نیب کو چوہدری شوگر ملز کیس میں میاں نواز شریف سے تفتیش کرنی ہے۔ جیل کا قیدی ہونے کی وجہ سے میاں نواز شریف تفتیش کے لیے نیب آفس پیش نہیں ہوسکتے لہذا عدالت جیل میں میاں نواز شریف سے تفتیش کی اجازت دے۔

نیب کے مطابق چوہدری شوگر ملز کیس میں میاں نواز شریف سے تفتیش بہت ضروری ہے، جس کے بغیر کیس آگے نہیں بڑھ سکتا۔ عدالت نے نیب کی درخواست پر میاں نواز شریف سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی۔

خیال رہے چوہدری شوگر ملز کیس میں نیب نے مریم نواز اور یوسف عباس کو بھی گرفتار کر رکھا ہے جو جسمانی ریمانڈ کے بعد اس وقت جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں