The news is by your side.

Advertisement

نواشریف کے پلیٹ لیٹس میں‌ کمی، مسوڑوں سے خون آنا شروع، اسپتال ذرائع

نوازشریف کےعلاج میں کسی قسم کی کوتاہی نہیں کی گئی ، نیب کا مؤقف

لاہور: سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ ن کے تاحیات صدر نوازشریف کے مسوڑوں سے خون آنا شروع ہوگیا جسے ڈاکٹرز نے خطرے کی علامت قرار دے دیا۔

اسپتال ذرائع کے مطابق نواز شریف کے  مسوڑوں سے خون آنا شروع ہوگیا، ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم کے جسم کے کسی بھی حصے سے خون بہنا بڑے خطرے کی علامت ہے۔اسپتال انتظامیہ کے مطابق مسوڑوں سےخون آنے کے بعد پلیٹ لیٹس سیلزمعمول سے کم ہوئے جس کی روشنی میں ڈاکٹرز نے مریض کا دوبارہ ٹیسٹ کیا۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز یار محمد کے مطابق نواز شریف کے پلیٹ لیٹس ایک بار پھر کم ہوکر  28000 سے 7000 ہزار  تک پہنچ گئے، انہیں اب تک بلڈ سیلز کی 5 میگا کٹس لگائی جاچکی ہیں۔

مزید پڑھیں: میگا کٹ لگنے کے بعد نواز شریف کے پلیٹ لیٹس مزید بڑھ گئے، ملاقاتیوں کا تانتا بندھ گیا

قبل ازیں مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ طبیعت خراب ہونے پر نوازشریف کو طبی سہولت فراہم نہیں کی گئی، اس سے قبل شہبازشریف کی بڑے بھائی سے ڈیڑھ گھنٹے ملاقات ہوئی۔

نواز شریف کے پلیٹ لیٹس ایک بار پھر کم ہوگئے

نواز شریف کے پلیٹ لیٹس ایک بار پھر کم ہوگئے — نواز شریف کے پلیٹ لیٹس 28000 سے 7000 ہزار رہ گئے — نواز شریف کو اب تک بلڈ سلیز کی 5 میگا کٹس لگائی گئی ہیں#ARYNews

Posted by ARY News on Wednesday, 23 October 2019

دوسری جانب قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے اعلامیہ جاری کیا گیا جس میں بتایا گیا ہے کہ نوازشریف کےعلاج میں کسی قسم کی کوتاہی نہیں کی گئی،سب جیل منتقلی پر ایمبولینس اور تین ڈاکٹرز کی خدمات حاصل کی گئیں تھیں، نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان کو ملنےسےکبھی نہیں روکا۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف ذاتی معالج کی تجویز کردہ ادویات استعمال کرتے رہے، نیب کی جانب سے سہولتیں فراہم کی گئیں تھیں البتہ نوازشریف نے انہیں لینے سے انکارکیا تھا۔

نیب ترجمان کا کہنا تھا کہ شہبازشریف کا نوازشریف کےعلاج میں غفلت کابیان مضحکہ خیزہے، ڈاکٹرعدنان نےنوازشریف سے گیارہ، انیس اور اکیس اکتوبرکوملاقاتیں کیں۔

اس سے قبل وزیر اعظم عمران خان نے وزیر اعلیٰ پنجاب کو ہدایت کی تھی کہ وہ نوازشریف کو بہترین طبی سہولیات فراہم کی جائیں اور وہ ملک میں جہاں چاہیں انہیں علاج کی سہولت فراہم کی جائے۔

وزیر اعظم نے نوازشریف کی صحت یابی کے لیے دعا اور نیک تمناؤں کا اظہار بھی کیا۔

صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ نوازشریف سروسز اسپتال میں علاج سے مطمئن ہیں، انہوں نے بیرونِ ملک جانے کی خواہش کا اظہارنہیں کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں