The news is by your side.

Advertisement

پختونخواہ میں ترقی کا کوئی قابل ذکر کارنامہ نہیں: نواز شریف

اسلام آباد: سابق وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخواہ میں لوگ گتھم گتھا رہے، ایک دوسرے پر کرپشن کے الزامات لگاتے رہے۔ ترقی کا وہاں کوئی قابل ذکر کارنامہ نہیں، صرف جھوٹ، دھرنے اور الزام ہے۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کے موقع پر میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ دنیا میرے بیانیہ کو قبول کر رہی ہے، چشتیاں جلسے میں لوگ نعرے لگا رہے تھے ووٹ کو عزت دو۔

انہوں نے نعیم الحق کے دانیال عزیز کو تھپڑ مارنے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف کا کلچر یہی ہے، اس کلچر کے ذمے دار عمران خان ہیں۔ انہوں نے ہی اس کلچر کی بنیاد رکھی۔

نواز شریف نے کہا کہ خیبر پختونخواہ میں لوگ گتھم گتھا رہے، ایک دوسرے پر کرپشن کے الزامات لگاتے رہے۔ ’ترقی کا وہاں کوئی قابل ذکر کارنامہ نہیں، صرف جھوٹ، دھرنے اور الزام ہے، امپائر کی انگلی اور اس کے پیچھے ناچنا ہے‘۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 4 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کا وعدہ کیا تھا وہ کہاں ہے؟ ایک ارب درخت، 360 ڈیم کہاں ہیں۔ ہم نیا پختونخواہ دیکھنے کے لیے جانے کو تیار ہیں۔

نواز شریف نے کہا کہ ’پنجاب آئیں ہم نیا پنجاب دکھانے کو تیار ہیں، یو این ڈی پی کے مطابق پختونخواہ سے زیادہ جنوبی پنجاب میں خوشحالی ہے‘۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں