The news is by your side.

Advertisement

کرپشن سے کوئی تعلق نہیں، کس قانون کے تحت سزا دی جارہی ہے، نواز شریف

لندن: سابق نااہل وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان میں نظام عدل کو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے، کرپشن سے کبھی کوئی تعلق نہیں رہا، مجھے کس قانون کے تحت سزا دی جارہی ہے؟

لندن میں اسپتال کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ اہلیہ کی کیموتھراپی جاری ہے اور میں بوگس کیس بھگتنے جارہا ہوں، کرپشن سے دور دور تک کبھی کوئی تعلق نہیں رہا۔

سابق نااہل وزیر اعظم نے کہا کہ میں کیوں ہر دس سال بعد ملک چھوڑوں، آخر میں نے کیا کیا ہے، میرا ضمیر بھی تو کوئی چیز ہے، میرے اندر بھی جذبات موجود ہیں۔

وطن واپسی پر گرفتاری سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ ایسا تو 1999 سے ہوتا آرہا ہے، ہائی جیکنگ کیس میں مجھے کس قانون کے تحت سزا دی گئی تھی؟ اور آج مجھے کس قانون کے تحت سزا دی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب ریفرنسز اقامے کا شاخسانہ ہیں، اقامہ صحیح نہیں تو ریفرنسز کیسے صحیح ہوسکتے ہیں۔

نواز شریف کی وطن واپسی نیب نے رن وے تک رسائی مانگ لی

دوسری جانب نیب نے نواز شریف کی وطن آمد پر رن وے تک رسائی مانگ لی ہے، اس ضمن میں نیب نے طیارے تک رسائی حاصل کرنے کے لیے ایئرپورٹ انتظامیہ کو خط بھی لکھا ہے۔

نیب کی جانب سے خط میں موقف اختیارکیا گیا ہے کہ ملزم نواز شریف کی پیشی کے لیے عدالتی احکامات کی تعمیل قانونی طور پر بہت ضروری ہے۔

واضح رہے کہ احتساب عدالت نے ملزم نواز شریف کو تین نومبر کو پیش کرنے کا حکم دے رکھا ہے، عدالت نے نواز شریف کے قابل ضمانت وارنٹ بھی جاری کئے ہوئے ہیں۔

یہ پڑھیں: مائنس نواز مارمولا، شہباز شریف، وزیراعظم اور کابینہ کی لندن دوڑیں


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں