The news is by your side.

Advertisement

میرے خلاف تیسرا فیصلہ بھی آنے والاہے،نواز شریف

اسلام آباد : سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ مجھے اقامہ پر نکالا گیا جسے آج تک کسی نے تسلیم نہیں کیا، مجھے پارٹی سربراہ سے بھی نااہل کردیا گیا اور اب میرے خلاف تیسرا فیصلہ بھی آنے والاہے، تیسرے فیصلے میں الیکشن لڑنے سے بھی نااہل کردیں گے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نااہل وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ ن لیگ کوسینیٹ الیکشن سے محروم کیاجارہاہے، یہ پوری قوم کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ مجھے اقامہ پر نکالا گیا جسے آج تک کسی نے تسلیم نہیں کیا، مجھے پارٹی سربراہ سے بھی نااہل کردیاگیا، چورڈاکو ،سسلین مافیاکہاجاتاہےپھرکہتےہیں ہمیں بہت احترام ہے، میرے خلاف تیسرا فیصلہ بھی آنے والا ہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ میرانہیں خیال یہ فیصلے سنہری حروف میں لکھنے کے قابل ہیں، جےآئی ٹی کے سوالوں کا جواب مل رہا ہے،پتہ چل رہا ہے کیس میں کچھ نہیں، ایک کےبعد ایک فیصلہ دیاجارہاہے۔

انکا کہنا تھا کہ یہ فیصلےدھاندلی کےمترادف ہیں، تیسرےفیصلےمیں الیکشن لڑنےسےبھی نااہل کردیں گے، مجھےالیکشن لڑنے سے محروم کیا جائے گا، قوم کے لیے یہ لمحہ فکریہ ہے، میں پوچھنا چاہتا ہوں یہ سب کیا ہے ، آج ہمارے مؤقف کو تقویت ملی ہے۔


مزید پڑھیں :  مجھے تو نااہل قرار دیاگیابتایا جائے ان کو کون نااہل قرار دے گا،نواز شریف


گذشتہ روز نااہل وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ 20 کروڑ عوام نے نہ 28جوالائی کافیصلہ مانا نہ مانے گی ، اقامے پر پتہ نہیں مجھے کتنی بار نااہل کریں گے، مجھے تو نااہل قرار دیا گیا بتایا جائے ان کو کون نااہل قرار دے گا۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ ہ ایک کروڑ عوام کے بنائے گئے قانون کو رد کیا گیا ، نواز شریف سے وزارت عظمیٰ، پارٹی صدارت چھین لی گئی، اب آپ میرا نام بھی چھیننا چاہتے ہیں تو چھین لیں، پارلیمنٹ کے واضح  قانون سے انحراف کرکے مجھے نااہل کیا گیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں