The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف نے حکومت کی طرف سے دی گئی مشروط اجازت مسترد کردی

لاہور: مسلم لیگ ن کے قائد کے وکیل کا کہنا ہے کہ نوازشریف نے حکومت کی طرف سے دی گئی مشروط اجازت مسترد کر دی، مشروط طور پر نام نکالنے کو اسلام آباد یا لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق اے آروائی نیوز سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے نوازشریف کے وکیل نے کہا کہ عدالت میں ضمانتی مچلکے جمع کرا چکے ہیں، حکومت کس قانون کے تحت رقم مانگ رہی ہے، عدالت نے ضمانت دی ہے کوئی پابندی نہیں لگائی۔

وکیل نوازشریف نے کہا کہ نوازشریف عدالتی حکم اور قانون کو مانتے ہیں، مشروط طور پرنام نکالنے کو اسلام آباد یا لاہورہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے، خواجہ حارث نے درخواست تیار کر رکھی ہے، آج ہی دائر کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ درخواست لاہور یا اسلام آباد میں دائر ہونے کا فیصلہ خواجہ حارث کریں گے۔ نواز شریف کے وکیل نے کیس فائل اور تفصیلی فیصلے کی مستند کاپی حاصل کرلی۔

نوازشریف کے وکیل سے سوال کیا گیا کہ نواز شریف کی 8 ہفتے کی طبی بنیادوں پر ضمانت کو چیلنج کریں گے؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ پہلے ای سی ایل کا معاملہ حل ہوجائے، پھر اس معاملے کو دیکھیں گے۔

نوازشریف کو 4 ہفتے کیلئے بیرون ملک جانے کی مشروط اجازت

یاد رہے کہ گزشتہ روز کابینہ کی ذیلی کمیٹی کے سربراہ فروغ نسیم نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ نوازشریف کو4 ہفتے کے لیے بیرون ملک جانے کی ون ٹائم اجازت ہوگی جبکہ نوازشریف یا شہبازشریف 7 ارب روپے کے سیکیورٹی بانڈزجمع کرائیں گے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں