site
stats
اہم ترین

جب بھی جمہوریت مضبوط کرنے کی کوشش کی گئی‘کلہاڑا چلایاگیا: نوازشریف

Nawaz Sharif

کراچی: پاناما کیس میں نااہل قرار دیے جانے والے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے عدلیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئےکہا ہے کہ ملک کی عدلیہ کے ایک حصے نے ہمیشہ آمروں کا ساتھ دیا‘ پاکستان میں پہلی بار ایک آمر احتساب کے خوف سے ملک سے باہر رہ رہا ہے۔

تفصیلا ت کے مطابق کراچی کے نجی ہوٹل میں جمہوریت کے موضوع پر منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ ’’پاکستان کی تاریخ میں جمہوریت پر حملوں کی ایک داستاں ہے‘ جب بھی جمہوریت مضبوط کرنے کی کوشش کی گئی‘کلہاڑا چلایاگیا‘‘۔

انہوں نے جسٹس منیر کیس کا تذکرہ کرتے ہوئے عدلیہ کو ایک بار پھر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ’’ہماری عدلیہ کےایک حصےنےجمہوریت کےبجائےآمروں کاساتھ دیا۔جسٹس منیرنےنظریہ ضرورت کاسہارالےکرمارشل لاکوسپورٹ کیا‘ 70سال سےجمہوریت کواپنی منزل تک پہنچنےنہیں دیاگیا۔ 1958میں انتخابات ہونےوالےتھےتومارشل لاء لگادیاگیا‘‘۔

ان کا کہنا تھا کہ’’ ملک کی تباہی کا اصل سبب پی سی او ہے۔ ججز کو آئین میں ترمیم کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے‘ لیکن انہوں نے ہمیشہ آمروں کو آئین میں ترمیم کا حق دیا۔ کبھی بھی ان معاملات میں جسٹس حمود الرحمن کےعاصمہ جہانگیر کیس کو نظیر نہیں سمجھا گیا ‘ بلکہ جسٹس منیر کے فیصلے سے روشنی لی گئی‘‘۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ’’1999میں ایک مرتبہ پھرجمہوریت ہارگئی اورنظریہ ضرورت جیت گیا‘ پی سی اوکےتحت ڈکٹیٹرکوآئین میں ترمیم کاحق دیاگیا۔افسوس ہےجسٹس منیرکوجسٹس حمودالرحمان پرترجیح دی گئی۔آمروں نےجمہوری عمل کوشدیدنقصان پہنچایا ‘ ملک کی 70 سالہ تاریخ میں 4آمروں نے30سال تک اپناسکہ چلایا‘‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’’گزشتہ پارلیمنٹ نےپہلی مرتبہ اپنی مدت پوری کی ‘ موجودہ حکومت مشکلات سےگزرکراپنی مدت پوری کرنےجارہی ہے۔حکومت کواپنی مدت پوری کرنےمیں4ماہ رہ گئےلیکن بےیقینی ہے‘‘۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’’بلوچستان میں کیاہوا،آپ سب جانتےہیں وزیراعلیٰ کوکیسےہٹایاگیا‘‘۔

انہوں نے تقریر کے اختتام پر کہا کہ’’ پاکستان میں جمہوریت کا مستقبل تابناک ہے‘ سیاسی کارکنان کو اس کے لیے بھرپور جدودجہد کرنا ہوگی‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’2014میں پہلی بارخصوصی عدالت بنی اورآمرپربغاوت کامقدمہ بنا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ کوئی آمر احتساب کے خوف سے ملک سے باہر رہ رہا ہو‘‘۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top