نوازشریف متنازع بیان: اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست قابل سماعت قرار
The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف متنازع بیان: اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست قابل سماعت قرار

اسلام آباد : ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ممبئی حملوں سے متعلق حالیہ بیان پر ان کیخلاف درخواست قابل سماعت قرار دیتے ہوئے ڈی جی ایف آئی اے، چیئرمین پیمرا، چیئرمین پی ٹی اے کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے جج جسٹس عامر فاروق نے نواز شریف کیخلاف درخواست پر سماعت کی۔ سماعت کے دوران درخواست گزار کی جانب سے وکیل ڈاکٹر بابر اعوان پیش ہوئے۔

بابر اعوان نے دلائل دیئے کہ نواز شریف نے اپنے حلف سے غداری کی ہے، یہ آئین شکنی کا بھی معاملہ ہے،  سماعت کے دوران عدالت نے استفسار کیا کہ کیا عدالت ٹی وی چینلز پر نواز شریف کی لائیو تقاریر پر پابندی لگا سکتی ہے؟

بابر اعوان نے جواب دیا کہ ایم کیو ایم کے بانی الطاف حسین کیس میں عدالت ایسی پابندی لگا چکی ہے، جسٹس عامر فاروق نے درخواست قابل سماعت قرار دیتے ہوئے فریقین کو نوٹسز جاری کر دیئے، جن افراد کو نوٹس جاری کیے گئے ہیں ان میں  ڈی جی ایف آئی اے، چیئرمین پیمرا، چیئرمین پی ٹی اے شامل ہیں جبکہ عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو نوٹس جاری نہیں کیا۔

واضح رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ممبئی حملوں سے متعلق بیان پر ان کیخلاف درخواست دائر کی گئی تھی۔

مزید پڑھیں: نواز شریف کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست پرفیصلہ محفوظ

درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ ریاست کے خلاف بیان پر نواز شریف کے خلاف تادیبی کارروائی کے لیے ایف آئی اے کو حکم دیا جائے اور پیمرا کو بھی نواز شریف کی تقاریر نشر کرنے پر پابندی لگانے کا حکم دیا جائے۔

مزید پڑھیں: ملک دشمن بیان پر نواز شریف کے خلاف سندھ اور پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع

درخواست میں نواز شریف، ڈی جی ایف آئی اے، چیئرمین پیمرا اور چیئرمین پی ٹی اے کو فریق بنایا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں