The news is by your side.

Advertisement

بھارتی اداکار نواز الدین صدیقی’’ سعادت حسن منٹو‘‘ کا کردار ادا کریں گے

ممبئی: بھارتی اداکار نواز الدین صدیقی سعادت حسن منٹو کی زندگی پر بننے والی فلم میں منٹو کا کردار ادا کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق نندیتا داس نے اپنی نئی آنے والی فلم کا اعلان کرتے ہوئے بتایا کہ یہ فلم سعادت حسن منٹو کی زندگی پر بنائی جائیگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’ میرے ذہن میں منٹو کے کردار کو ادا کرنے کے لئے  اداکار نواز الدین صدیقی کا نام تھا، کیونکہ نواز الدین صدیقی اس کردار اس کی گہرائی کے مطابق کرنے کے اہل ہیں‘‘۔

شائستہ اور دھیمہ لہجے رکھنے والے فنکار نواز الدین صدیقی نے اپنی کرئیر کا آغاز حال ہی میں ریلیز ہونے والی فلم بجرنگی بھائی جان اور لنچ بکس سے کیا تھا۔


یہ فلم سعادت حسن منٹو کی پوری زندگی پر نہیں بنائی جارہی تاہم منٹو کی زندگی کے آخری کچھ سال اور  خاص طور پر  تقسیمِ برٖصغیر کے وقت کے کچھ مناظر پیش کیے جائیں گے، فلم کی شوٹنگ رواں سال کے آخر میں ممبئی اور لاہور میں مکمل کی جائے گی۔

فلم کی ہدایتکار امونندیا داس کے مطابق  منٹو بہت گہری سوچ رکھتے تھے ، انہوں نے ہر چیز کو معاشرے کے حساب سے کھل کر بیان کیا ہے اور یہی آزادی اظہار رائے ہے کہ آدمی معاشرے میں اپنی شناخت بنائے اور اپنے اردگرد رہنے والوں کی حوصلہ افزائی کرے۔

سعادت حسن منٹو کو جنوبی ایشیاء  کی تاریخ میں سب سے زیادہ افسانہ لکھنے والوں میں سے ایک تصور کیا جاتا ہے، وہ بھارت کے شہر سمارا میں پیدا ہوئے تاہم  1947 کی تقسیم کے  بعد ہجرت کر کے پاکستان کے شہر لاہور منتقل ہوگئے۔

منٹو نے اپنی زندگی کے دوران کئی کتابیں لکھیں، ناقدین کی جانب سے تصانیف پر فحاشی کا الزام لگنے پر منٹو نے کہا کہ ’’ اگر آپ میری کتابوں میں فحاشی تلاش کرتے ہو تو یہ آپ کا مسئلہ نہیں کیونکہ آپ گندے معاشرے کا حصہ ہو، میری کہانیاں حقیقت پر مبنی ہے اور میں سچ کو بے نقاب کرتا رہوں گا۔

منٹو شراب نوشی کے باعث 42 سال کی عمر میں 1955 میں پاکستان میں انتقال کرگئے، ان کی خدمات کو دیکھتے ہوئے حکومتِ پاکستان کی جانب سے 2012 میں انہیں نشانہ امتیاز سے نوازا گیا تھا۔

فلم کی ہدایتکاری امور نندیا داس سرانجام دے رہی ہیں، جن کی پہلی فلم فراق 2008 میں ریلیز ہوچکی ہے، اس فلم میں نصیر الدین شاہ نے اپنی اداکاری کی صلاحتیوں سےمداحوں کے دل جیت لیے تھے۔

فلم  کے پروڈیوسر وویک کجاریا ہیں جو ہولی بسیل پروڈکشن ہاؤس کے زیر تحت کام کرتے ہیں، ماضی میں وویک کئی مراٹھی فلمیں بنا چکے ہیں مگر یہ فلم ان کی ہندی زبان کی پہلی فلم ہوگی، اس فلم کے لئے سرمایہ کاری امریکہ کے شہری روبن رائنا کر رہے ہیں جو امریکہ میں سافٹ وئیر کمپنی کے چئیرمین بھی ہیں۔

اس سے قبل منٹو کی زندگی پر 2015 میں فلم نشر جا چکی ہے، جس میں معروف پاکستانی اداکارہ صنم سعید نے اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے تھے، فلم کی کہانی شاہد ندیم نے لکھی جبکہ اس ڈائریکٹر بابر جاوید اور ہدایتکار پاکستانی ہدایتکار سرمد سلطان کھوسٹ تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں